جنوبی کوریا نے پر ویز مشرف کو جنوبی کوریا آنے سے کیوں روک دیا تھا ؟جنوبی کوریا میں جہازوں کی پرواز اور لینڈنگ پر پابندی کیوں لگائی جاتی ہے۔پڑھئے اہم حقائق

جنوبی کوریا نے پر ویز مشرف کو جنوبی کوریا آنے سے کیوں روک دیا تھا ؟جنوبی کوریا میں جہازوں کی پرواز اور لینڈنگ پر پابندی کیوں لگائی جاتی ہے۔پڑھئے اہم حقائق

جنوبی کوریا نے پر ویز مشرف کو جنوبی کوریا آنے سے کیوں روک دیا تھا ؟جنوبی ... 31 مئی 2018 (11:22) 11:22 AM, May 31, 2018

جاوید چودھری کا کہنا کہ "نومبر 2002میں پرویز مشرف جنوبی کوریا گئے تھے یہ چین کے راستے جنوبی کوریا گئے تھے - وہ دو دن چین میں ٹھہرے اور پھر جنوبی کوریا جانے کے لیے بیجنگ کے ایئر ہورٹ سے روانہ ہوئے -وہ جہاز میں سوار ہو چکے تھے اور جہاز کے دروازے بھی بند کیے جا چکے تھے چین کی حکومت نے ان کے پروٹوکول کے لیے کوریا میں بھی ان کے آنے کی اطلاع دے دی -تو انہوں نے کچھ دیر تک پرویز مشرف کو آنے سے روک دیا -یہ بات پرویز مشرف اور چینی حکام دونوں کے لیے پریشان کن تھی -اس پرشانی میں ایک گھنٹہ گزر گیا اور پرویز مشرف ایک گھنٹے کے بعد کوریا کے لیے روانہ ہوئے -جب یہ وہاں پہنچے تو کورین حکومت نے ان سے معذرت کی اور کہا کہ ابھی پرائمری سکول کے بچوں کے امتحان ہو رہےہیں -بچے پیپر کے دوران جہاز کی آواز سے پریشان نہ ہوں اس لیے ہم پیپر کے دوران جہازوں کی پرواز اور لینڈنگ پر پابندی لگا دیتے ہیں -

جب آپ چین سے روانہ ہونے والے تھے تو ہم نے اندازہ لگایا کہ آپ پیپر کے دوران ہی کوریا پہنچ جائیں گے تو ہم نے آپ کی پرواز روک دی -اب یہ جواز ثابت کرتا ہے کہ زندہ قومیں اپنے سٹوڈنٹس کو کتنی اہمیت دیتی ہیں کہ ان کے پیپرز کے دوران انہوں نے ایک صدارتی جہاز کو فضا میں رکوا لیا-

ایک طرف تو کورین حکام کا یہ اعلیٰ رویہ ہے اور دوسری طرف شہباز پڑھے لکھے صوبہ کے وزیراعلیٰ نے کل ایک نئی مثل قائم کی ہے -وہ جب میانوالی میں جلسے کے لیے جارہے تھے تو میانوالی میں تمام سکولوں کو وہاں کے حکام نے جلسہ گاہ بلو لیا اور سکول سے چھٹی دے دی -پھر شہباز شریف کسی وجہ سے میانوالی نہ جا سکے اور اسطرح بچوں کا ایک پورا دن ضائع ہو گیا -آپ فرق ملاحظہ کریں ایک طرف کورین حکام کا وہ اعلیٰ رویہ ہے اور دوسری طرف ہمارے ملک کے حکام کا یہ رویہ ہے -آپ تعلیم کے لیے کچھ کریں نہ کریں سکول بنائیں نہ بنائیں لیکن خدا را اپنے سیاسی جلسے کامیاب بنانے کے لیے بچوں کو استعمال کرنا چھوڑ دیں -"

متعلقہ خبریں