ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ

ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ

ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ 31 اگست 2018 (12:43) 12:43 PM, August 31, 2018

نیدرلینڈز میں انتہائی دائیں بازو کے قانون ساز گیرٹ وائلڈر نے قتل کی دھمکیوں اور دوسروں کی زندگیوں کو لاحق خطرات کے سبب پیغمبر اسلام کے خاکوں کا مقابلہ منسوخ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

گریٹ وائلڈر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’اسلامی تشدد کے خطرات کے سبب میں نے فیصلہ کیا ہے کہ اب کارٹون بنانے کا مقابلہ نہیں ہو گا۔‘

پیغبرِ اسلام کے خاکے بنانے کا یہ مقابلہ رواں سال نومبر میں نیدر لینڈ کی پارلیمان میں گریٹ وائلڈر کی سیاسی جماعت کے دفتر میں منعقد ہونا تھا۔

خاکوں کا مقابلے کے انعقاد کے اعلان کے بعد پاکستان سمیت دنیا بھر میں شدید احتجاج کیا گیا تھا اور مذہبی جماعت تحریک لبیک پاکستان کا اس سلسلے میں لاہور سے اسلام آباد کی جانب احتجاجی لانگ مارچ شروع کیا تھا۔

مقابلہ منسوخ کرنے کے اعلان کے بعد پاکستان تحریک لبیک کے سربراہ خادم حسین رضوی کی جانب سے ان کی جماعت کے لانگ مارچ ختم کرنے کی بھی ٹویٹ کی گئی۔

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مقابلے کی منسوخی کو ’اخلاقی فتح‘ قرار دیا ہے اور انھوں نے کہا کہ اُمتِ مسلمہ کے تعاون سے وہ اس معاملے پر او آئی سی اور اقوام متحدہ میں بھرپور آواز اُٹھائیں گے۔

اس سے قبل قوم کے نام اپنے ویڈیو پیغام میں وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ گستاخانہ خاکوں کے مسئلے پراو آئی سی کے فورم سے اقوام متحدہ میں بات کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ نبی کریمﷺ مسلمانوں کے دل میں رہتے ہیں، گستاخانہ خاکوں پر ہر مسلمان کو افسوس ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ جب کوئی فرد،نبی کریم ﷺ کی شان میں گستاخی کرتاہےتوتمام مسلمانوں کوتکلیف ہوتی ہے،ہم دنیا کو اس مسئلے کے بارے میں سمجھائیں گے۔

متعلقہ خبریں