سحری اور افطاری میں دودھ سوڈا پینا گرمی کا توڑ یا بیماریوں کی جڑ ۔۔پڑھئے فوڈ ایکسپرٹ کا تجزیہ۔

سحری اور افطاری میں دودھ سوڈا پینا گرمی کا توڑ یا بیماریوں کی جڑ ۔۔پڑھئے فوڈ ایکسپرٹ کا تجزیہ۔

سحری اور افطاری میں دودھ سوڈا پینا گرمی کا توڑ یا بیماریوں کی جڑ ۔۔پڑھئے فوڈ ... 30 مئی 2018 (16:31) 4:31 PM, May 30, 2018

سحری اور افطاری میں دودھ سوڈا پینے کے متعلق فوڈ ایکسپرٹ محسن بھٹی کا نجی ٹی وی چینل سے بات چیت کے دوران کہناتھا کہ :" سحری اور افطاری میں جو ہم دودھ سوڈا پی رہے ہیں وہ ہمارے لیۓ بہت خطرناک ہے -یہ گرمی کا توڑ نہیں بلکہ ہڈیوں کا توڑ ہے -یہ جتنے بھی کول رنکس ہیں آپ کو پتہ ہے کہ کاربونیٹڈ ڈرنکس ہیں -

اس میں کاربونک ایسڈ ہے اور اس میں سلفیٹ اب دونوں مل کے یہ ہوگا کہ کاربونک ایسڈ اور اس میں ایک بوتل میں پچاس ملی گرام کیفین ہوتی ہے اور اسمیں چینی کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے اب یہ سب ہماری صحت کے لیے نقصان دہ ہے ان کا جب ملاپ جب دودھ کے ساتھ بنتا ہے تو دودھ میں موجود جو کیلشیم ہوتا ہے وہ یہ ساری جذب کر لیتا ہے اب دودھ کی جو افادیت ہے وہ ختم ہو جاتی ہے -

اب جو لوڈرنکس ہیں ان کی اپ ی کوئی افادیت نہیں ہے صرف نقصان ہے صرف ایک وقتی تسکین ہے ادھر سے کیلشیم ساری لے لی اب کیلشیم کا اور فاسفورس کی ون ٹو ون ریشو ہونی چاہیے ہمارے خون میں -دونوں کا تناسب بیلنس ہونا چاہیے جب خون میں کیلشیم کی مقدار کم ہو جاتی ہے تو ہمارا جو دماغ ہے وہ سگنل جاری کرتا ہے اور ہڈیوں میں جو کیلشیم ہے اس کو کھینچ کے خون کو دیتا ہے اور ہڈیوں میں جو کیلشیم ہے وہ ادھر استعمال ہو جا تا ہے -

تو یہ جو کاربونیٹڈ ڈرنکس ہیں پلس دودھ سوڈے کی شکل میں ہماری ہڈیوں کو کمزور کر دیتی ہیں "

متعلقہ خبریں