ملک ریا ض کو ٹھکانے لگانے کیبعد میاں منشا نیب کے نشانے پر،آج کی بڑی خبر

ملک ریا ض کو ٹھکانے لگانے کیبعد میاں منشا نیب کے نشانے پر،آج کی بڑی خبر

ملک ریا ض کو ٹھکانے لگانے کیبعد میاں منشا نیب کے نشانے پر،آج کی بڑی خبر 28 جون 2018 (23:49) 11:49 PM, June 28, 2018

میاں منشاء کے خلاف نیب نے منی لانڈرنگ کی تحقیقات کا آغاز کردیا،نیب نے میاں منشاء کو طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا۔تفصیلات کے مطابق نیب آجکل بہت متحرک ہو چکی ہے بالخصوص جب سے جسٹس (ر) جاوید اقبال نے نیب کی باگ ڈور سنبھالی ہے ،نیب نے کرپشن کے خلاف بڑا محاذ کھول دیا۔ایک جانب شریف خاندان کے خلاف کیسسز تیزی سے منطقی انجام کی جانب جا رہے تودوسری جانب دیگر کرپٹ سیاسی و سرکاری شخصیات کے خلاف تیزی سے کاروائیوں کا سلسہ جاری ہے۔

ضرور پڑھیں :الیکشن میں اصل میچ ن لیگ کیساتھ ہے اور میچ جیتنے کیلئے ہر وہ قدم۔۔۔۔۔۔عمران خان کا دبنگ بیان

ضرور پڑھیں :قومی اسمبلی کی نشستوں پر بڑے بڑے نام مدِ مقابل ،تفصیل پڑھئے

قبل ازیں سپریم کورٹ نے ملک ریاض کی تمام جائیداد ضبط کرنے کا حکم دیدیاہے۔ بحریہ ٹا ون کوپانچ ارب بطورگارنٹی جمع کرانیکی ہدایت جاری کی گئی ہے۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ملک صاحب آپ سے پائی پائی کا حساب لینگے۔آپ کے لین دین اورتعلقات کا علم ہے،کیاحکومتیں گرانے اوربنانے میں آپ کا کردارنہیں ہے۔عدالت نے نظرثانی فیصلے تک نیب کوبحریہ ٹائون کیخلاف کارروائی سے روک دیا۔پاکستان کے چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے سپریم کورٹ کے ہی ایک اور تین رکنی بینچ کا فیصلہ معطل کر کے بحریہ ٹاؤن کراچی کی انتظامیہ کو لوگوں سے پیسے وصول کرنے کی اجازت دے دی ہے ۔

بدھ کو بی بی سی اور نجی ٹی وی کے مطابق سماعت کے دوران بحریہ ٹا ؤن کے مالک ملک ریاض ملک کے نامور وکلا کے ساتھ کمرہ عدالت میں موجود تھے۔ عدالت کی اجازت کے بغیر ہی ملک ریاض روسٹم پر آگئے اور چیف جسٹس جسٹس ثاقب نثارکا ان کے ساتھ مکالمہ بھی ہوا۔چیف جسٹس نے ملک ریاض کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو ڈان، آپ کے اعمال اور لوگوں نے بنایا ہے۔

دالت نے بحریہ ٹاؤن کے مالک ملک ریاض اور ان کے بچوں کے نام جائیداد کی تفصیلات بھی فراہم کرنے کا حکم دیا ہے ۔

سپریم کورٹ نے بحریہ ٹاؤن کراچی کے الاٹیز سے حاصل کی جانے والی رقم کا 20 فیصد عدالت میں جمع کروانے جبکہ 80 فیصد تنخواہوں اور ترقیاتی کاموں پر خرچ کرنے کا حکم دیا ہے ، عدالت نے بحریہ ٹاؤن کی انتظامیہ کو ماہانہ آڈٹ رپورٹ بھی جمع کروانے کا حکم دیا ہے ۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کل کی ساری عدالتی کارروائی میڈیا نے بلیک آؤٹ کردی، کیا آپ کا اتنا اثر و رسوخ ہے ؟ کیا آپ نے پیسے تو نہیں لگا دیے؟ ملک ریاض آپ کے ساتھ ناانصافی نہیں ہوگی۔

اس پر ملک ریاض نے کہا کہ ہر چیز میرے نام نہ لگائی جائے، پورے میڈیا میں مجھے ڈان بنا دیا گیا، جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ کیا آپ حکومتیں بنانے اور گرانے میں ڈان نہیں بنے رہے ؟

جس پر ملک ریاض نے کہا کہ میں نے کیا گناہ کیا ہے ، اس پر چیف جسٹس نے ملک ریاض کو مخاطب کرتے ہوئے ریمارکس دیے کہ حکومتیں بنانے اور گرانے کا کام چھوڑ دیں، ملک ریاض وہ وقت نہیں رہا، جب آپ کے لیے اگلے ہی دن حکومتیں تبدیل ہوجاتی تھیں۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے کہا کہ اپنے اخراجات کے لیے جتنے پیسے چاہئیں وہ رکھ لیں، ہمیں بتائیں سینیٹ انتخابات میں آپ نے کیا کیا؟چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ہمیں معلوم ہے کہ آپ نے سینیٹ انتخابات میں کیا کردار ادا کیا، آپ بس رہنے دیں۔

اس دوران چیف جسٹس نے مکالمہ کیا کہ ملک ریاض میں بحریہ ٹاؤن کراچی کا دورہ کرنے کے لیے آرہا ہوں، میں نے حساب کتاب کرکے ایک ایک روپیہ واپس کروانا ہے ، چیف جسٹس نے کہا کہ اگر ملک ریاض کو جیل بھیج دیا تو جہاں کرین کھڑی ہے وہیں کھڑی رہے گی ۔

بینچ کے سربراہ نے ملک ریاض کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ پہلے وہ کسی کے ساتھ مل کر حکومتیں تبدیل کروا لیتے تھے لیکن اب ایسا نہیں ہوگا۔چیف جسٹس نے بحریہ ٹان کے مالک کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ اب توبہ کرلیں اور اب وہ کہیں اور نہیں بلکہ سپریم کورٹ میں کھڑے ہیں۔ بحریہ راولپنڈی کا سارا گند دریائے سواں میں پھینکا جاتا ہے۔سیکرٹری لا اینڈ جسٹس کمیشن خود جا کردیکھ کرآئے ہیں۔

انھوں نے ملک ریاض سے استفسارکیاکہ کیاڈھائی سال میں اتنا بڑا شہر کوئی کھڑا کرسکتاہے۔آپ کے سارے لین دین اورتعلقات کا علم ہے۔عدالت نے بحریہ ٹائون کو15دن میں 5ارب بطورگارنٹی جمع کرانے ورملک ریاض ، ان کی اہلیہ اوربچوں کی تمام جائیدادضبط کرنے کاحکم دیدیااورہدایت کی کہ بحریہ ٹائون الاٹیزسے وصول رقم کا20فیصدعدالت میں جمع کرانا ہوگا جبکہ اکائونٹ کی ماہانہ آڈٹ رپورٹ پیش کرنا ہوگی۔ سپریم کورٹ نے نیب کو نظرثانی فیصلے تک بحریہ ٹائون کیخلاف کارروائی سے بھی روک دیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز کیس کی سماعت کرتے ہوئے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ملک ریاض سے کہا تھا کہ وہ ’تیسری دنیا کے ملک کو پہلی دنیا کی ریاست بنانے‘ کے سلسلے میں اپنی آخرت کی بھی فکر کریں۔

متعلقہ خبریں