طالبہ کی و ہ نظم جس نے طیب اردگان کو رلا دیا

طالبہ کی و ہ نظم جس نے طیب اردگان کو رلا دیا

طالبہ کی و ہ نظم جس نے طیب اردگان کو رلا دیا 27 مئی 2018 (19:53) 7:53 PM, May 27, 2018

البانیہ کے اسکول کی ایک طالبہ کی طیب اردوان کے لیے ان کے سامنے پڑھے جانے والی ایک خوبصورت نظم - جسے سن کر طیب اردوان کی آنکھیں بھی اشکبار ہو گئیں :

اے ملت اسلامیہ کے فخر!

ہمارے عزیزصدر رجب طیب ایردوان میں بھی آپ کی طرح امام خطیب سکول میں پڑھتی ہوں

میں امام خطیب سکول سے آپ کے لیے محبتوں بھرا سلام لائی ہوں

یقین کیجیے کہ البانیہ کے لوگ آپ سے بہت محبت کرتے ہیں

اور اللّٰہ سے آپ کے لیے بہت دعا کرتے ہیں -

یہ ہمارے دلوں کی دعا ہے

اے اللّٰہ!ان میناروں سے اٹھتی اپنی آذانوں کی آواز سے ہمیں محروم نہ کرنا

اے اللّٰہ یہ شہد کی مکھیوں کی طرح ہمیں شہد بنانے کے لیے پکرتے ہیں

ہمارے مینار ایمان کے نور کے بغیر ایسے ہیں جیسے آسمان میں کہکشاں نہ ہو

اےاللّٰہ ! ایمان کے نور سے محروم نہ کرنا

اے اللّٰہ !میری ارض پاک کو اس کے مکینوں ,صالح مسلمانوں سے آباد رکھنا

ہمیں قوت اور ہمت عطا کرنا

اے اللّٰہ !ہمارے جہاد کے میدانوں کو جری سپہ سالاروں سے محروم نہ کرنا

اے اللّٰہ !س منتظر ملت کو راہنما سے محروم نہ کرنا

دشمن کے خلاف مزاحمت میں ہمیشہ ہماری راہنمائی کرنا

اے اللّٰہ !ہمیں بے مقصد اور بے یارو مدد گار نہ چھوڑنا

میں سارے آنسو بہا دوں اور ایک بھی باقی نہ بچے

یا اللّٰہ ! اس سے پہلے مجھے میری نیکی سے محروم نہ کرنا

یااللّٰہ ! ہمیں محبت پانی ,ہوا اور اس وطن سے محروم نہ کرنا

یا اللّٰہ میری ارض پاک کو اس کے مکینوں , صالح لوگوں سے محروم نہ کرنا !

متعلقہ خبریں