پرویز مشرف جب ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو امریکہ کے حوالے کرنے جا ریے تھے تو میں نے کیا کیا کہ یہ ممکن نہ ہو سکا۔ظفراللّٰہ خان جمالی کا حیرت انگیز انکشاف

پرویز مشرف جب ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو امریکہ کے حوالے کرنے جا ریے تھے تو میں نے کیا کیا کہ یہ ممکن نہ ہو سکا۔ظفراللّٰہ خان جمالی کا حیرت انگیز انکشاف

پرویز مشرف جب ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو امریکہ کے حوالے کرنے جا ریے تھے تو میں ... 27 مئی 2018 (14:44) 2:44 PM, May 27, 2018

2002 میں پرویز مشرف کیا واقعی ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو امریکہ کے حوالے کرنے جا ریے تھے 2002میں پرویز مشرف کے دور میں منتخب ہونے والے وزیراعظم ظفراللّٰہ خان جمالی کو وزارت عظمہ کے عہدے سے کیوں ہٹایا گیاتھا - ظفراللّٰہ خان جمالی نے وجہ بتا دی ہے - ظفراللّٰہ خان جمالی کا حامد میر کے پروگرام میں کہنا تھا کہ :" مشرف صاحب ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو امریکہ کے حوالے کر رہے تھے - امریکہ سے جہاز ان کو لے جانے کے لیے پاکستان میں کھڑا تھا -میں نے مشرف صاحب کو منع کر دیا تھا -کیوں کے کسی بھی شخص کو ڈی پوٹ کرنے کے لیے چیف ایگزیکٹو آف پاکستان کے دستخط کے بغیر ڈی پوٹ نہیں کر سکتے اور دوسرا میں انہیں ایسا نہیں کرنے دے سکتا تھا کیونکہ ڈاکٹر عبدالقدیر خان قوم کا اثاثہ تھے, ہیں اور رہیں گے-"

لیفٹیننٹ جنرل شاہد عزیز اس بارے میں کہتے ہیں کہ :"یہ فیصلہ اسطر ح نہیں ہوا تھا کہ کوئی اس کی حمایت کرتا -ایک دفعہ پریزیڈنٹ کانفرنس روم میں آئے ہم چار پانچ لوگ وہاں بیٹھے ہوئے تھے تو انہوں نے ہم سے کہا کہ امریکہ ہم سے یہ ریکویسٹ کر رہا ہے کہ انہیں جیکب آباد ایئر پورٹ پر فیسیلیٹز دی جائیں تا کہ اگر ان کا کوئی جہاز ہٹ ہو جائے ,تو پائلٹ کی جان بچانے کے لیے اس کو وہاں ٹچ راؤنڈ کی اجازت دی جائے - وہاں پر جتنے بھی لوگ بیٹھے تھے انہوں نے اس کی مخالفت کی تو پریزیڈنٹ نے کہا کہ میں امریکہ کو اس کے ساتھ اس چیز کی کمٹمنٹ کر چکا ہوں - پھر کچھ عرصے بعد پریزیڈنٹ کے احکامات آئے کہ آپ جیکب آباد کی سیکیورٹی کے لیے ٹروپس بھیج دیں تو جب ہم نے ویاں ٹروپس بھیجے تو انہوں نے واپس آکے ہمیں رپورٹ دی کہ انہوں تو ایئر پرٹ کے اندر جانے نہیں دیا جا رہا -کچھ عرصے بعد مجھے پتہچلا کہ ایک اور ایئر پورٹ بھی اسی طرح شروع سے امریکہ کے پاس ہے -"

متعلقہ خبریں