سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے قومی اسمبلی کے اپنے آ بائی حلقہ 57 مری سے کاغذات نامزدگی مسترد

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے قومی اسمبلی کے اپنے آ بائی حلقہ 57 مری سے کاغذات نامزدگی مسترد

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے قومی اسمبلی کے اپنے آ بائی حلقہ 57 مری سے ... 27 جون 2018 (17:10) 5:10 PM, June 27, 2018

لاہورہائی کورٹ راولپنڈی بینچ نے اپلیٹ ٹربیونل کے جج جسٹس عباد الرحمان لودھی نے سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے قومی اسمبلی کے حلقہ 57 مری سے کاغذات نامزدگی مسترد کر دئیے جبکہ الیکشن ٹربیونل نے این اے 67 جہلم سے پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری کے کاغذات نامزدگی مسترد کرتے ہوئے انہیں الیکشن لڑنے کے لیے نااہل قرار دے دیا ہے ۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے خلاف پی ٹی آئی کے ایک کارکن مسعود احمد عباسی نے اپلیٹ ٹربیونل میں اعتراضات دائر کئے تھے ۔ اعتراضات میں کہا گیا تھا کہ شاہد خاقان عباسی نے اپنے فارم کو چیک نہیں کیا اور اپنی جائیداد کے حوالہ سے بھی صحیح معلومات الیکشن کمیشن کو نہیں دی ۔ جبکہ شاہد خاقان عباسی پر کاغذات نامزدگی میں ٹمپرنگ کرنے اور لارنس کالج کے جنگل پر قبضہ کرنے کا الزام لگایا گیا تھا۔

اپلیٹ ٹربیونل نے درخواست پر دو روز قبل فیصلہ محفوظ کیا تھا جو بدھ کے روز سنا دیا گیا اور شاہد خاقان عباسی کے قومی اسمبلی کے حلقہ 57 مری سے کاغذات نامزدگی مسترد کر دئیے گئے جبکہ اپلیٹ ٹربیونل نے این اے 67 جہلم سے پی ٹی آئی ترجمان فواد چوہدری کے کاغذات نامزدگی بھی مسترد کر دئیے۔

درخواست گزار نے اعتراض کیا تھا کہ فواد چوہدری نے اپنے اثاثے چھپائے ہیں۔ اپلیٹ ٹربیونل نے درخواست منظور کرتے ہوئے فواد چوہدری کو قومی اسمبلی کے حلقہ 67 جہلم پر انتخاب لڑنے کے لیے نا اہل قرار دے دیا ہے۔

متعلقہ خبریں