پرویز مشرف کو دودھ سے مکھی کی طرح نکالا ۔ہم اسٹیبشلمنٹ کے ساتھ نہیں پاکستان کے ساتھ ہیں۔زرداری کی نواز شریف اور مشرف کو تیز گیندیں

پرویز مشرف کو دودھ سے مکھی کی طرح نکالا ۔ہم اسٹیبشلمنٹ کے ساتھ نہیں پاکستان کے ساتھ ہیں۔زرداری کی نواز شریف اور مشرف کو تیز گیندیں

پرویز مشرف کو دودھ سے مکھی کی طرح نکالا ۔ہم اسٹیبشلمنٹ کے ساتھ نہیں پاکستان ... 26 مئی 2018 (10:36) 10:36 AM, May 26, 2018

پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیرمین آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ ’’ہم اسٹیبشلمنٹ کے ساتھ نہیں پاکستان کے ساتھ ہیں۔ ہم نے پرویز مشرف کو دودھ سے مکھی کی طرح نکالا کیونکہ ایک آمر کو نکالنا میرے لیے بہت ضروری تھا‘‘۔ ہماراکسی سےکوئی تناؤنہیں،ملک کےساتھ ہیں۔ آصف زرداری نےکہاکہ بینظیرکی سوچ اوروژن کےمطابق فاٹاکےانضمام کافیصلہ کیا۔فاٹاکےانضمام سےقبائلیوں کوشناخت ملےگی۔ذاتی مفادات کی وجہ سےکچھ لوگ اس کی مخالفت کرتےرہے۔ آصف زرداری کاکہناتھاکہ فاٹاانضمام بل کی منظوری پرپارلیمنٹ کومبارکبادپیش کرتاہوں۔فاٹاکےانضمام کافیصلہ ملک اورقوم کےحق میں ہوگا۔بہت سےکاموں کاصلہ آنےوالی نسلوں کوملتاہے،فاٹامیں دہشتگردی،انتہاپسندی کاواحدحل سیاسی جماعتیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ ’’ نواز شریف دوہری باتیں کرتے ہیں۔ وہ پہلے بھی ہم سے گیم کھیلتے تھے اور آج بھی کھیل رہے ہیں‘‘۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آصف علی زرداری نے کہا کہ ’’ہم نے نواز شریف کو پنجاب میں حکومت بنانے دی۔ نواز شریف اس وقت بھی ہمارے ساتھ کھیل کھیل رہے تھے اور آج بھی کھیل رہے ہیں۔ وہ کہتے کچھ ہیں اور کرتے کچھ ہیں۔ نواز شریف سچ ماننے کو تیار نہیں تو وہ سچ کیا بولیں گے‘‘۔پیپلز پارٹی کے شریک صدر کا کہنا تھا کہ اگر طاہرالقادری کندھا نہ دیتے تو عمران بھی دھرنا نہیں دے سکتا تھا۔دھرنے کی سیاست آگے لے کر نہیں جاتی ۔میاں صاحب ہمیشہ کہتے کچھ اور کرتےکچھ ہیں اسی لئے دوریاں ہوئیں، سیاست میں لوگوں کا جارحانہ رویہ مناسب نہیں ،سیاست میں پرتشدد رویہ سے عوام پر اثر پڑتا ہے۔نگران وزیر اعظم کے معاملے پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نگراں وزیراعظم کےلئے ہم نے دو نام دیئے تھے، ان میں سے ایک بزنس مین اوردوسراسابق سیکریٹری ہے۔نگراں وزیر اعظم سے متعلق پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین نے کہا کہ نگران وزیر اعظم کے لیے ہم نے ریٹائرڈ ججز کے نام نہیں دیے، ہماری جانب سے نگراں وزیر اعظم کے ناموں میں ایک بزنس مین ہے اور ایک سابق سیکرٹری خارجہ ہے۔آصف علی زرداری اور پاکستان مسلم لیگ(ن) کے درمیان ایک عرصہ سے تلخی دیکھنے میں آرہی ہے اور حالیہ دنوں میں دونوں اطراف سے سخت بیانات دیکھنے میں آئے ہیں۔ سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ الیکشن کے دنوں میں دونوں جماعتیں مزید سخت بیانات دیں گی۔

متعلقہ خبریں