سابق آئی ایس آئی سربراہ ڈی ایچ کیو حا ضر ہوں۔پاک فوج نے سابق آئی ایس آئی سربراہ کی کتاب پر تحفظات ظا ہر کر دیئے۔

سابق آئی ایس آئی سربراہ ڈی ایچ کیو حا ضر ہوں۔پاک فوج نے سابق آئی ایس آئی سربراہ کی کتاب پر تحفظات ظا ہر کر دیئے۔

سابق آئی ایس آئی سربراہ ڈی ایچ کیو حا ضر ہوں۔پاک فوج نے سابق آئی ایس آئی ... 26 مئی 2018 (03:59) 3:59 AM, May 26, 2018

اسلام آباد : آئی ایس آئی کے سابق سربراہ لیفٹیننٹ جنرل (ر) اسد درانیاسد درانی کی کتاب پر فوج کے تحفظات سامنے آ گئے، اسد درانی کو پوزیشن واضح کرنے کیلئے 28 مئی کو جی ایچ کیو طلب کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق، پاک فوج کو اسد درانی کی کتاب پر تحفظات ہیں، اسلیے ان کو پوزیشن واضح کرنے کیلئے جی ایچ کیو طلب کیا گیا ہے۔ کتاب میں بہت سے موضوعات حقائق کے برعکس بیان کیے گئے ہیں، ملٹری کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر پوزیشن واضح کرنا ہو گی۔

سربراہ لیفٹیننٹ جنرل (ر) اسد درانی نے سابق ‘را’ چیف اے ایس دلت کے ساتھ مل کر لکھی ہے۔ اس کتاب میں پاکستان اور بھارت کے درمیان اہم حساس اور خفیہ معاملات پر بات کی گئی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ لیفٹیننٹ جنرل (ر) اسد درانی سے ملٹری کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر پوزیشن واضح کرنا ہوگی۔ حکام کا کہنا ہے کہ ملک و قانون سے کوئی بھی بالاتر نہیں، اسد درانی کیخلاف کارروائی کا فیصلہ بروقت اور بڑا قدم ہے۔

کتاب میں جن معاملات پر روشنی ڈالی گئی، اُن میں کارگل آپریشن، ایبٹ آباد میں امریکی نیوی سیلز کا اسامہ بن لادن کو ہلاک کرنے کا آپریشن، کلبھوشن یادیو کی گرفتاری، حافظ سعید، کشمیر، برہان وانی اور دیگر معاملات شامل ہیں۔

اس حوالے سے جنرل (ر)اسد درانی کو اپنی پوزیشن واضح کرنے کیلئے 28 مئی کو جی ایچ کیو طلب کیا گیا ہے، ملٹری کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر پوزیشن واضح کرنا ہوگی۔

آئی ایس پی آر ترجمان نے لیفٹیننٹ جنرل (ر) اسد درانی کو جی ایچ کیو طلب کرنے کی تصدیق کردی۔ اپنے ٹویٹر پیغام میں میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ سابق آئی ایس آئی سربراہ کو 28 مئی کو جنرل ہیڈ کوارٹر طلب کرکے ان کی کتاب ’’اسپائی کرونیکلز‘‘ پر وضاحت پیش کرنے کا کہا گیا ہے