فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انظمام کا بل قومی اسمبلی کیبعد سینٹ میں منظوری کے لیے پیش کر دیا گیا۔

فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انظمام کا بل قومی اسمبلی کیبعد سینٹ میں منظوری کے لیے پیش کر دیا گیا۔

فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انظمام کا بل قومی اسمبلی کیبعد سینٹ میں منظوری ... 25 مئی 2018 (14:39) 2:39 PM, May 25, 2018

فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انظمام کا بل سینٹ میں منظوری کے لیے پیش کر دیا گیاہے- چیئرمین صادق سنجرانی کی زیر صدارت سینیٹ کا اجلاس جاری ہے جس کے دوران وفاقی وزیر قانون و انصاف محمود بشیر ورک نے فاٹا کے انضمام سے متعلق آئینی بل پیش کیاہے - جس پر شق وار منظوری کا عمل جاری ہے۔ حکومت کی اتحادی جماعت جمعیت علماء اسلام (ف) اور پختونخوا ملی عوامی پارٹی کی جانب سے فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام پر مخالفت ابھی تک برقرار ہے۔

فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انظمام کے متعلق اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے شیریں رحمان نے کہا ہے کہ :"پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں فاٹا اصلاحات پر کام شروع ہواتھا، فاٹا کے لوگ پوری شہریت اور صرف اپنا بنیادی حق مانگ رہے ہیں۔ پہلی بار یوسف رضا گیلانی نے ایف سی آر کے خاتمے کی بات کی تھی "

کل قومی اسمبلی نے بھی فاٹا کے خیبر پختونخوا میں انضمام سے متعلق 31ویں آئینی ترمیم منظور کی تھی جس کے لیے ایوان میں موجود 229 اراکین نے بل کی حمایت میں اور صرف ایک رکن نے مخالفت میں ووٹ دیاتھا-

متعلقہ خبریں