تب ہی کہتے ہیں امریکہ جسکا دوست اسے دشمن کی ضرورت نہیں۔شمالی کوریا کیساتھ امریکہ نے ھاتھ کر دیا

تب ہی کہتے ہیں امریکہ جسکا دوست اسے دشمن کی ضرورت نہیں۔شمالی کوریا کیساتھ امریکہ نے ھاتھ کر دیا

تب ہی کہتے ہیں امریکہ جسکا دوست اسے دشمن کی ضرورت نہیں۔شمالی کوریا کیساتھ ... 25 مئی 2018 (11:19) 11:19 AM, May 25, 2018

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شمالی کوریا کے لیڈر کِم جونگ سے 12 جون کو سنگاپور میں ہونے والی اپنی طے شدہ ملاقات منسوخ کردی ہے۔انھوں نے کہا ہے کہ انھوں نے شمالی کوریا کے لیڈر کے امریکا مخالف حالیہ بیانات کے بعد اس ملاقات کو منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

صدر ٹرمپ نے کِم جونگ کے نام ایک خط لکھا ہے جس میں انھوں نے ملاقات کے منسوخ ہونے وجوہات بیان کی ہیں۔وائٹ ہاؤس کی جانب سے جمعرات کو جاری کردہ اس خط میں صدر ٹرمپ نے لکھا ہے کہ ’’وہ یہ محسوس کرتے ہیں کہ یہ ملاقات بالکل نامناسب ہو گی ‘‘۔

وہ لکھتے ہیں:’’ شمالی کوریائی اپنی جوہری صلاحیتوں کے بارے میں بہت زیادہ باتیں کرتے ہیں لیکن ہماری جوہری صلاحیتیں ان سے کہیں بڑھ کر اور طاقتور ہیں ‘‘۔

دوسری جانب شمالی کوریا کی حکومت نے ایک بیان میں امریکا کے نائب صدر مائیک پینس کو ایک ’’ سیاسی ڈمی‘‘ قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ وہ جوہری محاذ آرائی کی صورت میں بھی اسی طرح مقابلہ کرنے کو تیار ہے جس طرح وہ مذاکرات کی میز پر آمنا سامنا کرنے کے لیے تیار ہے۔

صدر ٹرمپ نے خط میں کِم جونگ اُن سے مخاطب ہوکر کہا ہے کہ وہ ملاقات کے بارے میں انھیں کسی تردد کے بغیر لکھ سکتے ہیں یا فون کال کرسکتے ہیں ۔

یاد رہے جمعرات کو، کم جونگ نے اعلان کیا تھا کہ ان کا ملک مزید ایٹمی ہتھیاروں اور بین الاقوامی بلیسٹک میزائلوں کا تجربہ نہیں کرے گا۔

متعلقہ خبریں