غیر قانونی مہاجرین کے بارے میں ٹرمپ کا بڑا فیصلہ

غیر قانونی مہاجرین کے بارے میں ٹرمپ کا بڑا فیصلہ

غیر قانونی مہاجرین کے بارے میں ٹرمپ کا بڑا فیصلہ 25 جون 2018 (14:19) 2:19 PM, June 25, 2018

امریکا میں امیگریشن کے معاملے میں ایک نئی پیش رفت میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مطالبہ کیا ہے کہ غیر قانونی مہاجرین کو عدالت سے رجوع کیے بغیر فوری طور پر اُن کے اپنے ملکوں کو واپس بھیجا جائے۔

اس حوالے سے ٹرمپ نے اپنی 3 ٹوئیٹس میں کہا کہ امریکا کو مہاجرین کے دھاوے کا سامنا ہے۔ انہوں نے ہجرت سے متعلق موجودہ پالیسیوں کو سکیورٹی کے لیے ضرر رساں شمار کرتے ہوئے ڈیموکریٹس پر زور دیا کہ وہ ہجرت سے متعلق حالیہ قوانین کی اصلاح کے لیے تعاون کریں۔ ٹرمپ کے مطابق ہجرت کے ارادے سے آنے والے بچوں کی اکثریت اپنے خاندانوں کے بغیر ہوتی ہے۔ انہوں نے باور کرایا کہ "ہماری امیگریشن پالیسی دنیا میں ایک مذاق ہے۔ یہ ہر اُس شخص کے لیے غیر منصفانہ ہے جو نظام کے ساتھ قانونی طریقے سے چل کر کئی برس تک اپنی باری کا انتظار کرتا ہے"۔

امریکی صدر نے بدھ کے روز ایک حکم نامہ جاری کیا تھا س کے تحت امریکا میں غیر قانونی طور آنے والے خاندانوں کو علاحدہ نہیں کیا جائے گا بلکہ بچوں کو والدین کے ساتھ ہی حراستی مراکز میں رکھا جائے گا۔

اس موقع پر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ انہیں خاندانوں کو علاحدہ ہوتا ہوا دیکھنا اچھا نہیں لگتا۔ البتہ ٹرمپ نے واضح کیا کہ غیر قانونی طور پر سرحد عبور کر کے امریکا آنے والوں کے لیے عدم برداشت کی پالیسی جاری رکھی جائے گی۔

متعلقہ خبریں