باپ کے سامنے بیٹی کٹہرے میں مقدمہ بھگت رہی ہے۔نواز شریف۔جنہوں نے یہ روایات قائم کی، یہ سودا بہت مہنگا پڑے گا۔

باپ کے سامنے بیٹی کٹہرے میں مقدمہ بھگت رہی ہے۔نواز شریف۔جنہوں نے یہ روایات قائم کی، یہ سودا بہت مہنگا پڑے گا۔

باپ کے سامنے بیٹی کٹہرے میں مقدمہ بھگت رہی ہے۔نواز شریف۔جنہوں نے یہ روایات ... 24 مئی 2018 (14:17) 2:17 PM, May 24, 2018

اسلام آباد( آن لائن) نواز شریف کا کہنا ہے ملک میں حقیقی جمہوریت چاہیے تو سب کو حق کیلئے کھڑے ہونا ہوگا، مستعفی یا رخصت پر چلے جانے کا پیغام بھجوانے والے ماتحت کو فارغ کرسکتا تھا، لیکن ملک کی خاطر تحمل سے کام لیا۔

سابق وزیر اعظم نواز شریف کا مزید کہنا ہے کہ ایک باپ کے سامنے بیٹی کٹہرے میں مقدمہ بھگت رہی ہے، بیٹی کا دور دورتک اس مقدمے سے کوئی تعلق نہیں ، جنہوں نے یہ روایات قائم کی، یہ سودا بہت مہنگا پڑے گا۔

احتساب عدالت میں پیشی سے قبل صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو میں کہا کہ گزشتہ روز ان کی مکمل تقریر ٹی وی پر نشر ہونا حیران کن ہے، اگر ملک میں حقیقی جمہوریت چاہیے تو سب کو حق کیلئے کھڑے ہونا ہوگا، اب کھڑے ہوں گے تو یہ ممکن ہو جائے گا۔نواز شریف نے کہا کہ بیٹی کو کٹہرے میں لاکھڑا کرنا قابل مذمت اور کیا ہوسکتاہے، اس بے رحم کھیل میں بیٹیوں تک کو ملوث کررہےہیں، ایسے راستے نہ چنیں جہاں سے کسی کی واپسی ممکن نہ ہو۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میں تواس امتحان سے بھی گزرجاؤں گا، اس روش سے جو نتیجہ نکلے گا وہ سب کو بھگتنا ہوگا، جنہوں نے میرے خلاف مہم چلائی پوچھیں وہ کیا چاہتے ہیں، ملک بنانے کا مقصد کچھ اور تھا ہم کسی اور سمت جارہے ہیں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ دھرنوں کے وقت تحمل اور صبر سے کام لیا، ماتحت کو فارغ کرسکتا تھا، ملک کی خاطرتحمل سے کام لیا۔ مشاہد اللہ اور پرویز رشید کو فارغ کرنا بردباری کا حصہ تھا۔ نوازشریف کا کہنا تھا کہ حقائق منظرعام پرآنے چاہیئں عدالت میں بتانا تھا تو بتا دیا ہے، ہر چیز کا ایک وقت ہوتا ہے، سچ ریکارڈ پرلانے کے لئے گزشتہ روز بتایا۔

متعلقہ خبریں