فلسطینی وزیر خارجہ کا بین الاقوامی فوجداری عدالت سے اسرائیلی مظالم کیخلاف تحقیقات کا مطالبہ

فلسطینی وزیر خارجہ کا بین الاقوامی فوجداری عدالت سے اسرائیلی مظالم کیخلاف تحقیقات کا مطالبہ

فلسطینی وزیر خارجہ کا بین الاقوامی فوجداری عدالت سے اسرائیلی مظالم کیخلاف ... 23 مئی 2018 (03:28) 3:28 AM, May 23, 2018

فلسطینی وزیر خارجہ ریاض المالکی نے ہیگ میں قائم بین الاقوامی فوجداری عدالت ( آئی سی سی) کے پراسیکیوٹرز سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فلسطینی علاقوں میں اسرائیل کے خلاف انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور جنگی جرائم کے الزامات کی مکمل تحقیقات کریں ۔ان کا کہنا ہے کہ اسرائیل کے خلاف بیش بہا ثبوت دستیاب ہیں ۔

ریاض المالکی نے منگل کو آئی سی سی کی چیف پراسیکیوٹر فاتو بنسودا کو ’’ سفارشی حوالہ‘‘ بھی پیش کردیا ہے۔اس کی بنیاد پر ان کا دفتر اب ابتدائی تحقیقات سے آگے بڑھ سکتا ہے۔آئی سی سی کی چیف پراسیکیوٹر کا دفتر جنوری 2015ء سے فلسطینی علاقوں میں اسرائیل کے جرائم کی ابتدائی تحقیقات کررہا ہے۔

بین الاقوامی فوجداری عدالت کو اس کے قیام سے متعلق روم معاہدے پر دستخط کرنے والے 123 ممالک کی سرزمین پر جنگی جرائم ، نسل کشی اور انسانیت مخالف جرائم سے متعلق مقدمات کی سماعت کا اختیار حاصل ہے۔اسرائیل اس معاہدے میں شامل نہیں لیکن فلسطین اس کا حصہ ہے ،اس لیے فلسطینی سرزمین پر جرائم کے ارتکاب پر اسرائیلیوں کے خلاف مقدمات چلائے جاسکتے ہیں۔

یاد رہے کہ پاکستان نے اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کی جانب سے اسرائیلی بربریت کی مذمت نہ کرنے پر شدید افسوس کا اظہار کیا ہے۔ اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل سفیر نے کہا کہ پاکستان فلسطینیوں کی بھرپور حمایت کرتا ہے۔

ملیحہ لودھی او آئی سی کے سفیروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک ملک نے سلامتی کونسل کے 14 ارکان کی مظلوم فلسطینیوں پر اسرائیلی بربریت کے خلاف مشترکہ مذمتی قرارداد کو روک دیا۔

ملیحہ لودھی نے کہا کہ پاکستان فلسطینیوں کی بھرپور حمایت کرتا ہے، فلسطینیوں کے قتل عام پر اسرائیل کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ سلامتی کونسل نے بھی اسرائیلی مظالم کے خلاف مذمتی بیان جاری نہیں کیا۔

متعلقہ خبریں