پیپلز پارٹی کا معاملہ لاڑکانہ سے شروع ہو کر لاڑکانہ پر ختم ہو جاتا ہے اور مولانا فضل الرحمٰن کا معاملہ ڈیرہ اسماعیل خان سے شروع ہو کر ادھر ہی ختم ہو جاتا ہے،صابر شاکر

پیپلز پارٹی کا معاملہ لاڑکانہ سے شروع ہو کر لاڑکانہ پر ختم ہو جاتا ہے اور مولانا فضل الرحمٰن کا معاملہ ڈیرہ اسماعیل خان سے شروع ہو کر ادھر ہی ختم ہو جاتا ہے،صابر شاکر

پیپلز پارٹی کا معاملہ لاڑکانہ سے شروع ہو کر لاڑکانہ پر ختم ہو جاتا ہے اور ... 23 جون 2018 (01:06) 1:06 AM, June 23, 2018

اے آر وائے نیوز کے پروگرام "دی رپورٹرز " میں معروف تجزیہ نگار صابر شاکر نے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ :"جو جمہوریت کا راگ الاپتے ہیں ان کی اپنی جما عتوں کے اندر بدترین قسم کی آمریت ہے ن لیگ کی سیاست جاتی امراء سے شروع ہو کر جاتی امراء پر ہی ختم یو جاتی ہے - پیپلز پارٹی کا معاملہ لاڑکانہ سے شروع ہو کر لاڑکانہ پر ختم ہو جاتا ہے اور مولانا فضل الرحمٰن کا معاملہ ڈیرہ اسماعیل خان سے شروع ہو کر ادھر ہی ختم ہو جاتا ہے لیکن یہ مسلم لیگ ن کے اندر سب سے زیادہ ہے کیونکہ ان کا طرز حکومت فرعونیت والا ہوتا ہے وہ ایم این ایز کو ایم پی ایز کو وزراء کو کچھ نہیں سمجھتے اسی لیے لاہور سے ان کے خلاف ضعیم قادری صاحب کھڑے ہو گئے ہیں اور یہ ایسے ہی ہے جیسے لاڑکانہ سےبھٹو صاحب کے خلاف کوئی کھڑا ہو جائے -اسی طرح ضعیم قادری لاہور سے بولے ہیں اور انہوں نے ساری کشتیاں جلا کر ہی اتنا سخت بولا ہے تو انہوں نے سوچ سمجھ کر ہی یہ قدم اٹھایا ہو گا -

انہوں نےپنجابی میں کہتے ہیں کہ نکوں نک ہو جانا تو انہوں نے نکوں نک ہو کے یہ قدم اٹھایاہے اور ہم ذاتی طور پر جانتے ہیں کہ وہ پارٹی کے اندر رہتے ہوئے بھی بہت زیادہ قربانیاں دے رہے تھے تاکہ پاری کا نظم و ضبط قائم رہے اب خواجہ سعد رفیق ان کے ساتھ نظر آئے ہیں خواجہ سعد رفیق آپ کو ہر جگہ نظر آئیں گے جہاں کسی کو منانا ہو اور خواجہ سعد رفیق کا معاملہ بھی آنے والے دنوں میں اتنا اچھا نہیں ہوگا جس طرح سے انہوں نے اپنے اثاثے ظاہر کیر ہیں اور جو چھپائے ہیں -"

متعلقہ خبریں