کون ہو گا نگران وزیر اعظم ،فیصلہ نہ ہو سکا۔پانچویں ملاقات بھی بے نتیجہ ختم

کون ہو گا نگران وزیر اعظم ،فیصلہ نہ ہو سکا۔پانچویں ملاقات بھی بے نتیجہ ختم

کون ہو گا نگران وزیر اعظم ،فیصلہ نہ ہو سکا۔پانچویں ملاقات بھی بے نتیجہ ختم 22 مئی 2018 (13:11) 1:11 PM, May 22, 2018

اسلام آباد (ویب ڈیسک) حکومت کی پانچ سالہ مدت ختم ہونے میں 9 دن باقی رہ گئے لیکن نگران وزیر اعظم کی تقرری کے عمل میں اتفاق نہ ہوسکا۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ میں پانچویں ملاقات بھی بے نتیجہ ختم ہوگئی۔

تفصیلات کیمطابق نگران وزیراعظم کے نام کا حتمی فیصلہ کرنے کے لیے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی سید خورشید شاہ کے مابین ہونے والی ملاقات بے نتیجہ ختم ہو گئی۔ ملاقات میں آج بھی نگران وزیراعظم کے نام پر اتفاق نہیں ہو سکا ۔ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن لیڈر میں ملاقات 35 منٹ جاری رہی۔ خورشید شاہ کا کہنا تھا ملاقات ہوگئی، گیم اب حکومت کے ہاتھ میں ہے، ملاقات کا اگلا دور کل یا پرسوں دوبارہ ہوگا۔

اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ نگراں وزیراعظم کے نام کے انتخاب کے لیے کل یا پرسوں وزیراعظم سے دوبارہ ملاقات ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ کوشش ہےکہ معاملہ پارلیمنٹ میں حل ہو ۔

حکومت نے ابھی کسی نام پر اصرار نہیں کیا، وزیرا عظم نے پیپلز پارٹی اور حکومتی ناموں کو پسند کیا۔ یاد رہے کہ نگران وزیر اعظم کے لیے کسی ایک نام پر اتفاق کرنے کے لیے یہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی کی چھٹی ملاقات تھی جو بے نتیجہ رہی۔

ذرائع کے مطابق نگراں وزیراعظم کے لیے حکومت کے تجویز کردہ 3 ناموں میں جسٹس (ر) ناصر الملک، جسٹس (ر) تصدق حسین جیلانی اور ڈاکٹر شمشاد اختر شامل ہیں۔ نگران وزیراعظم کے لیے جن ناموں کا انتخاب کیا گیا یہ تینوں شخصیات نیک نامی اور اچھی شہرت کی حامل ہیں۔

ان تمام شخصیات نے اپنے عہدوں پربڑی ایمانداری کے ساتھ فرائض سرانجام دیے ہیں۔

دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف نے بھی جسٹس (ر) تصدق حسین جیلانی کا نام تجویز کیا ہے۔ پی ٹی آئی کی جانب سے اسٹیٹ بینک کے سابق گورنر ڈاکٹر عشرت حسین اور معروف صنعت کار عبدالرزاق داؤد کے نام بھی سامنے آ چکے ہیں۔

متعلقہ خبریں