نواز شریف کی احتسا ب عدالت میں پیشی ، اہم انکشاف کر ڈالا۔

نواز شریف کی احتسا ب عدالت میں پیشی ، اہم انکشاف کر ڈالا۔

نواز شریف کی احتسا ب عدالت میں پیشی ، اہم انکشاف کر ڈالا۔ 22 مئی 2018 (12:18) 12:18 PM, May 22, 2018

اسلام آباد(ویب ڈیسک)سابق وزیراعظم نواز شریف ایون فیلڈ ریفرنس میں مسلسل دوسرے روز اپنا بیان قلمبند کرا رہے ہیں۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں شریف خاندان کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیرکررہے ہیں۔جب کہ نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن (ر) محمد صفدر کمرہ عدالت میں موجود ہیں۔ دوسرے روز اپنا بیان قلمبند کراتے ہوئے کہا کہ قطری خاندان کے ساتھ کاروبار میں خود شریک نہیں رہا۔

مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف نے سماعت کے آغاز پرعدالت کوبتایا کہ اخترراجہ ، واجد ضیاء کے کزن ہیں اور ان کا عدالت میں دیا گیا بیان جانبدار تھا۔

انہوں نے کہا کہ جیرمی فری مین کے پاس ٹرسٹ ڈیڈ کی کاپی آفس میں موجود تھی جبکہ اخترراجہ، جےآئی ٹی اور تفتیشی افسرنے کاپی حاصل کرنے کی کوشش نہیں کی ۔

مسلم لیگ ن کے قائد نے کہا کہ اخترراجہ کومعلوم ہونا چاہیے کاپی پرفرانزک معائنے کا تصورنہیں، اخترراجہ نے دستاویز خودساختہ فرانزک ماہرکوای میل سے بھجوائیں۔

احتساب عدالت نے ریفرنس میں نامزد ملزمان سے الگ، الگ سوالات کے جواب طلب کر رکھے ہیں۔

سماعت کے دوران نواز شریف نے اپنا بیان قلمبند کراتے ہوئے قطری خطوط کو تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ خطوط کی تصدیق خود حمد بن جاسم نے سپریم کورٹ کو خط لکھ کر کی جب کہ جے آئی ٹی نے قطری شہزادے کا بیان ریکارڈ نہیں کیا اور جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیاء کا تبصرہ سنی سنائی بات ہے۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ اختر راجہ نے نیب کی 3 رکنی ٹیم کی رابرٹ ریڈلے سے ڈھائی گھنٹے ملاقات کرائی۔ رابرٹ ریڈلے کی رپورٹ کی کوئی حیثیت نہیں اُس کے پاس اصل دستاویز ہی نہیں تھی جب کہ سپریم کورٹ میں پہلے جمع کرائی گئی ڈیڈ میں غلطی سے پہلا صفحہ مکس ہو گیا تھا اور اختر راجا نے اس واضح غلطی کی نشاندہی بھی نہیں کی ۔

اس سے قبل چشتیاں میں سابق وزیرِاعظم نواز شریف نے کہا تھا کہ الیکشن میں (ن) لیگ کو اتنے ووٹ ملیں گے کہ تمام فیصلے ختم ھو جائیں گے۔

سابق وزیرِاعظم میاں محمد نواز شریف کا چشتیاں میں جلسے سے خطاب میں کہنا تھا کہ نیب میں 70 پیشیاں بھگت لیں لیکن کرپشن کا کوئی الزام ثابت نہیں ہو سکا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی خدمت کرنے والے کو کرپٹ یا غدار بنا دیا جاتا ہے۔ آئندہ الیکشن میں ووٹ کو عزت مل کر رہے گی۔ الیکشن میں (ن) لیگ کو اتنے ووٹ ملیں گے کہ تمام فیصلے ہوا میں اڑ جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ نہ تو مجھ پر کرپشن کا کوئی الزام ہے اور نہ ہی میں نے سرکاری خزانے میں کوئی خورد برد نہیں کی ہے۔ ایسے فیصلوں کا کچھ پتہ نہیں چلے گا۔ سابق وزیرِاعظم نے کہا کہ دوبارہ اقتدار میں آ کر عوام کی خدمت کیلئے پہلے سے زیادہ خدمت کریں گے، کسانوں کو مزید سستی کھاد دیں گے اور نوجوانوں کو روزگار دلوائیں گے۔

متعلقہ خبریں