دنیا کا وہ شہر جہاں سورج آدھی رات تک جگمگاتا ہے؟پڑھئے حیرت انگیز شہر کے بارے میں

دنیا کا وہ شہر جہاں سورج آدھی رات تک جگمگاتا ہے؟پڑھئے حیرت انگیز شہر کے بارے میں

دنیا کا وہ شہر جہاں سورج آدھی رات تک جگمگاتا ہے؟پڑھئے حیرت انگیز شہر کے بارے ... 22 جون 2018 (16:07) 4:07 PM, June 22, 2018

فٹبال کے عالمی کپ کے انعقاد کے موقع پر روس کے شہر دنیا کے مختلف ممالک سے آنے والے تماشائیوں کی توجہ کا مرکز بن گئے ہیں۔ تاہم سینٹ پیٹرزبرگ شہر اپنی کئی امتیازی خصوصیات کے سبب منفرد حیثیت کا حامل ہے۔ بالخصوص اس شہر کی راتیں جہاں آدھی رات تک سورج کی روشنی کا لطف اٹھایا جا سکتا ہے۔

سینٹ پیٹرزبرگ کی یہ روشن راتیں کروڑوں سیاحوں کی توجہ کا مرکز ہیں۔سینٹ پیٹرزبرگ قطب شمالی کے انتہائی نزدیک ہے۔ موسم گرما کے عرصے میں یہاں چند ہفتوں کے لیے رات کا وجود تقریبا ختم ہو جاتا ہے۔شہر کے لوگ اس مظہر کو ایک نیا جنم شمار کرتے ہیں جو چھ ماہ کی شدید اور تاریک سردی کے بعد سامنے آتا ہے۔مئی کے اواخر سے جولائی کے وسط تک اس حیران کن منظر کو دیکھنے کے لیے ہر سال تقریبا 50 لاکھ سیاح سینٹ پیٹرزبرگ کا رخ کرتے ہیں۔ یہ تعداد روس کے اس خوب صورت شہر کی آبادی کے مساوی ہے۔

دریائے نیوا کے کنارے محلات اور گرجوں کا منظر

سینٹ پیٹرز برگ(سانت پیتیرس ُبرگ) شمال مغربی روس کا ایک شہر ہے جو بحیرہ بالٹک میں خلیج فن لینڈ کے مشرقی کنارے پر دریائے نیوا کے ڈیلٹا پر واقع ہے۔ یہ عام طور پر پیٹر کہلاتا ہے جبکہ 1914ء سے 1924ء کے درمیان اسے پیٹرو گراڈ(سانت پیتیرس ُبرگ) اور 1924ء سے 1991ء تک لینن گراڈ (سانت پیتیرس ُبرگ)کہا جاتا تھا۔شہر کی بنیاد 16 مئی 1703ء کو روس کے زار پیٹر اعظم نے رکھی۔ یہ 200 سال سے زائد عرصے تک روسی سلطنت کا دار الحکومت رہا۔ انقلاب روس کے بعد 1917ء میں دار الحکومت ماسکو منتقل کر دیا گیا۔2002ء کی مردم شماری کے مطابق شہر کی آبادی 47 لاکھ ہے اور یہ روس کا دوسرا اور یورپ کا تیسرا سب سے بڑا شہر ہے۔سینٹ پیٹرز برگ (سانت پیتیرس ُبرگ) یورپ کا اہم ثقافتی مرکز اور روس کی اہم ترین بندرگاہ ہے۔ شہر کا کل رقبہ 1439 مربع کلومیٹر ہے اور یہ 10 لاکھ سے زائد آبادی کے حامل یورپی شہروں میں لندن کے بعد رقبے کے لحاظ سے دوسرا سب سے بڑا شہر ہے۔ یہ نیویارک سے دگنا اور پیرس پا غی) سے 13 گنا بڑا ہے۔سینٹ پیٹرز برگ (سانت پیتیرس ُبرگ) 10 لاکھ سے زائد آبادی کے حامل دنیا بھر کے شہروں میں انتہائی شمالی شہر ہے۔ شہر کے مرکز کو اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو نے عالمی ثقافتی ورثہ قرار دے رکھا ہے۔

متعلقہ خبریں