عام انتحابات 2018:پرویز مشرف کاووٹ عمران خان کے حق میں۔

عام انتحابات 2018:پرویز مشرف کاووٹ عمران خان کے حق میں۔

عام انتحابات 2018:پرویز مشرف کاووٹ عمران خان کے حق میں۔ 22 جون 2018 (14:15) 2:15 PM, June 22, 2018

سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف نے کہا ہے کہ نواز شریف اور شہباز شریف آزمائے ہوئے لوگ ہیں البتہ عمران خان اور تحریک انصاف کو ابھی آزمایا نہیں گیا۔ اس لئے میرے خیال میں الیکشن کے نتیجے میں عمران خان کی حکومت اقتدار میں آتی ہے تو بہتر ہوگا۔سابق صدر پرویز مشرف نے کہا کہ میرانواز شریف کے ساتھ موازنہ کیا جائے۔ میں ایک سچا آدمی ہوںاور سچی بات کرتا ہوں۔ مجھے ای سی ایل پر ڈال رکھا ہے جبکہ نواز شریف کو دنیا بھر میں گھومنے کی کھلی آزادی ہے۔ چک شہزاد کی جائیداد میں نے غالب نشتر سے خریدی تھی۔مجھ پر الزام لگانے والے کو ئی الزام بھی ثابت کریں۔ میں نے کسی کو غیر قانونی طریقے سے کوئی پلاٹ نہیں دیا اور کبھی قانون کی خلاف ورزی نہیں کی۔بہادری اور بیوف قوفی میں فرق ہوتا ہے۔

اہم یہ ہیکہ سابق صدر پرویز مشرف آل پاکستان مسلم لیگ کی چیئرمین شپ سے مستعفی ہو گئے ۔ پرویز مشرف نے اپنا استعفیٰ الیکشن کمیشن کو بھجوا دیا ہے۔ پرویز مشرف نے پشاور ہائیکورٹ کے نااہلی کے فیصلے کے باعث استعفیٰ دیا ہے۔پارٹی کے تمام معاملات اب ڈاکٹر امجد دیکھیں گے۔ پرویز مشرف کی نااہلی کی وجہ سے اے پی ایم ایل کو رجسٹریشن میں مشکلات کا سامنا تھا۔

قبل ازیں سابق صدر و آرمی چیف پرویز مشرف کے این اے ایک چترال سے کاغذات نامزدگی کو مسترد کردیا گیا ہے۔سابق صدر پرویز مشرف کی جانب سے این اے 1 چترال کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرائے گئے تھے جس کو ریٹرننگ افسر نے مسترد کردیا جب کہ اے پی ایم ایل کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر امجد کے کاغذات نامزدگی این اے 1 کیلئے منظور کرلیے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں