بس ہوسٹس مہوش کے قاتل نے اقرارِ جُرم کرتے ہوئے قتل کی وجہ بھی بتا دی۔

بس ہوسٹس مہوش کے قاتل نے اقرارِ جُرم کرتے ہوئے قتل کی وجہ بھی بتا دی۔

بس ہوسٹس مہوش کے قاتل نے اقرارِ جُرم کرتے ہوئے قتل کی وجہ بھی بتا دی۔ 21 جون 2018 (20:53) 8:53 PM, June 21, 2018

19 سالہ مہوش کو فیصل آباد میں بےدردی سے گولی مار کر قتل کر دیا گیا .مُجرم نے اقرارِ جُرم کرتے ہوئے کہا کہ اُس نے مہوش کو شادی کے انکار کی وجہ سے مارا تھا . سوشل میڈیا پر مہوش اور قاتل ,عُمر دراز کی ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں اُن دونوں کے درمیان تلخ جُملوں کا تبادلہ واضح دیکھا اور سُنا جا سکتا ہے . اس تلخ کلامی کے دوران مہوش کو عمر نے دھمکیاں دیں کہ " کل تم دیکھنا میں تُمھارے ساتھ بُہت بُرا کروں گا , جب تُم بس کے ٹرمینل سے گُزرو گی ". جب مہوش اگلے روز سیڑھیاں چڑھ کر جانے لگی تو قاتل نے فائر کر کے اُسے قتل کر دیا اور خود فرار ہو گیا .

پولیس نے قاتل کو قتل کی رات کو ہی پکڑ لیا تھا . پولیس کی جانب سے مہوش کے اہلِ خانہ کو یقین دہانی کروائی گئی ہے کہ قاتل کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا .

متعلقہ خبریں