تبدیلی کے بعد پرانے غلاف کعبہ کو کہاں رکھاجاتا ہے؟

تبدیلی کے بعد پرانے غلاف کعبہ کو کہاں رکھاجاتا ہے؟

تبدیلی کے بعد پرانے غلاف کعبہ کو کہاں رکھاجاتا ہے؟ 21 اگست 2018 (14:31) 2:31 PM, August 21, 2018

حسبِ معمول نو ذی الحج کو نماز فجر کے بعد خانہ کعبہ کا غلاف تبدیل کردیا گیا۔ الحرمین الشریفین کے امورکے ذمہ دار محکمے کی زیرنگرانی غلاف کعبہ کی تبدیلی کے عمل میں 160 ماہرین نےحصہ لیا۔

غلاف کعبہ کی تیاری کے ذمہ دار شاہ عبدالعزیز آڈیٹوریم کے ڈائریکٹر جنرل احمد المنصوری نے نجی عرب ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ آٹھ ذی الحج کو پہلے سے موجود غلاف کعبہ کو نماز ظہر کے بعد کھولا جاتا ہے اور یوم عرفہ یعنی نو ذی الحج کو پرانے غلاف کی جگہ نیا غلاف چڑھایا جاتا ہے۔ پرانے غلاف کعبہ کو حکومت کے ’غلاف کعبہ گودام‘ میں منتقل کر دیا جاتا ہے۔ پرانے غلاف کعبہ کو ہرقسم کے نقصان سے بچانے کےلیے حفاظتی اقدامات کیے جاتے ہیں۔ اگر کسی میوزیم کی طرف سے غلاف کعبہ کے لیے درخواست دی جائے تو اسے دے دیا جاتا ہے یا کسی ادارے کو ھدیہ بھی کیا جا سکتا ہے۔المنصوری نے بتایا کہ غلاف کعبہ کی تیاری میں 670 کلو گرام خام ریشم استعمال کیا جاتا ہے جس کے اندرونی حصے کو سیاہ رنگ میں رنگا جاتا ہے۔ 120 کلو گرام سنہری دھاگہ اور 100 کلو گرام چاندی کا دھاگہ استعمال کیا جاتا ہے۔غلاف کعبہ کو سیاہ رنگ سے رنگا جاتا ہے۔ اس کے کپڑے کی لمبائی 14 میٹر ہے جب کہ اس کی بالائی سنہری پٹی کی چوڑائی 95 سینٹی میٹر اور لمبائی 47 میٹر ہے۔ غلاف کعبہ میں 16 مربع شکل کےٹکڑے شامل کیے جاتے ہیں جن پر اسلامی عبارات منقش کی جاتی ہیں۔

متعلقہ خبریں