بڑے بدنام ہو کر تیرے کوچے سے نکلے ہم۔امریکہ نے اپنے بیٹے اسرائیل کیلئے اہم بین الاقوامی ادارہ چھوڑنے کا اعلان کر دیا۔

بڑے بدنام ہو کر تیرے کوچے سے نکلے ہم۔امریکہ نے اپنے بیٹے اسرائیل کیلئے اہم بین الاقوامی ادارہ چھوڑنے کا اعلان کر دیا۔

بڑے بدنام ہو کر تیرے کوچے سے نکلے ہم۔امریکہ نے اپنے بیٹے اسرائیل کیلئے اہم ... 20 جون 2018 (13:56) 1:56 PM, June 20, 2018

امریکہ نے اقوامِ متحدہ کی انسانی حقوق کونسل پر "متعصب" ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے اس کی رکنیت چھوڑنے کا اعلان کیا ہے۔اعلان واشنگٹن میں امریکی وزیرِ خارجہ مائیک پومپیو اور اقوامِ متحدہ میں امریکہ کی سفیر نکی ہیلی نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا۔

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے نکی ہیلی نے الزام عائد کیا کہ کونسل کے ارکان اسرائیل کے خلاف ایک عرصے سے تعصب برتتے آرہے ہیں اور انسانی حقوق غصب کرنے والوں کے محافظ بنے ہوئے ہیں۔ بین الاقوامی کونسل "سیاسی تعصب کا گٹر" بن چکی ہے۔ امریکہ نے گزشتہ ایک سال کے دوران کونسل میں اصلاحات کی بہت کوششیں کیں لیکن انہیں کامیاب نہیں ہونے دیا گیا۔ امریکی وزیرِ خارجہ مائیک پومپیو نے انسانی حقوق کونسل کو "منافقت کے بے شرم مشق" قرار دیا۔

پریس کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے امریکی وزیرِ خارجہ مائیک پومپیو نے انسانی حقوق کونسل کو "منافقت کے بے شرم مشق" قرار دیا۔امریکی سفیر نے روس، چین، کیوبا اور مصر پر امریکی کوششیں ناکام بنانے کا الزام عائد کرتے ہوئے ان ملکوں پر بھی تنقید کی جو ان کے بقول "امریکی اقدار پر یقین رکھتے ہیں اور چاہتے ہیں کہ امریکہ کونسل کا حصہ رہے" لیکن "اسٹیٹس کو کو چیلنج کرنے سے گریزاں ہیں۔"

اسرائیل کے وزیرِ اعظم بن یامین نیتن یاہو نے کونسل چھوڑنے کے امریکی اعلان کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ "یہ متعصبانہ تنظیم چھوڑنے کا اعلان کرکے امریکہ نے واضح کردیا ہے کہ بس اب بہت ہوچکا۔"

متعلقہ خبریں