پشاور ہائی کورٹ نے تیز رفتار بس منصوبہ (بی آر ٹی پراجیکٹ) کیس میں محفوظ تفصیلی فیصلہ جاری کردیا

پشاور ہائی کورٹ نے تیز رفتار بس منصوبہ (بی آر ٹی پراجیکٹ) کیس میں محفوظ تفصیلی فیصلہ جاری کردیا

پشاور ہائی کورٹ نے تیز رفتار بس منصوبہ (بی آر ٹی پراجیکٹ) کیس میں محفوظ ... 20 جولائی 2018 (12:00) 12:00 PM, July 20, 2018

پشاور ہائی کورٹ نے تیز رفتار بس منصوبہ ( بی آر ٹی پراجیکٹ ) کیس میں محفوظ تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے جس میں کہا گیا کہ جاری منصوبے کے تحقیقات نیب کرے گی اور اس سلسلے میں متعلقہ ادارے کو اپنے حصے کی اپنے ذمہ داریاں پوری کرنے کو کہا گیا ہے۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس وقار احمد سیٹھ کے دستخطوں سے جاری فیصلے میں بی آر ٹی منصوبے کو تحقیقات کے لئے نیب کو بھجوانے کے احکامات جاری کئے گئے ہیں اور اس سلسلے میں رپورٹ پانچ ستمبر 2018تک جمع کرنے کی ہدایت بھی کی گئی ہیں۔ فیصلے میں پشاور ڈیولپمنٹ اتھارٹی یا پی ڈی اے کے ڈائریکٹر جنرل جو کہ بی آر ٹی منصوبے کا پراجیکٹ ڈائریکٹر ہے کو اپنے عہدے پر برقرار رہنے کی بھی ہدایت دی گئی۔ تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ یہ منصوبہ جون 2018کو مکمل کیا جانا تھا لیکن مکمل نہیں ہوا جبکہ جس فرم کو ٹھیکہ جاری کیا گیا وہ فرم اسی منصوبے میں دوسرے صوبے میں بلیک لسٹ کی گئی ہیں۔عدالتی فیصلے میں بتایا گیا کہ منصوبے کی لاگت 49.3 بلین سے بڑھ کر 67.9 بلین روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ دیگر منصوبوں کے فنڈز بھی بی آر ٹی میں لگائے گئے ہیں۔ فاضل بنچ نے بی آر ٹی منصوبے کے تحقیقات نیب کے حوالہ کردی ہے۔

متعلقہ خبریں