ن لیگ کے دور میں ہوا ستائیس ہزار ارب بیرونی قرضے ہوگئے ہیں۔تہلکہ خیز انکشاف

ن لیگ کے دور میں ہوا ستائیس ہزار ارب بیرونی قرضے ہوگئے ہیں۔تہلکہ خیز انکشاف

ن لیگ کے دور میں ہوا ستائیس ہزار ارب بیرونی قرضے ہوگئے ہیں۔تہلکہ خیز انکشاف 19 جون 2018 (12:03) 12:03 PM, June 19, 2018

عمران خان نے ارشد شریف کو انٹرویو میںملکی مسائل کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ :"سب سے پڑا مسئلہ جو ایک عام انسان کا ہے وہ روزگار ہے خاص کر نوجوانوں کا -ایک گھرتباہ ہو جاتا ہے جب ایک نوجوان بے روزگار ہو -دوسرا مسئلہ یہ ہےمہنگائی روپےکی قیمت کم ہو گئی ہے - ن لیگ کے ہوتے ہوئے روپیہ گیا ہے نوے روپے سے ایک سو بیس روپے تک -اب جو میرے بینک میں سو روپے پڑے تھے بیٹھے بیٹھے وہ رہ گیا سترروپیہ ن لیگ کے آنے سے یعنی میرے پیسے کم ہو گئے ایک انسان کو مہنگائی کھا جاتی ہے مہنگائی ختم ہو گی گورنر سسٹم آنے سے گورنر سسٹم تب ٹھیک ہو گا جب ادارے ٹھیک ہوں گے اور جب گورنر سسٹم ٹھیک ہو گا پاکستان میں سرمایہ کاری ہو گی اور روزگار ملےگاکسی ملک میں حالات ٹھیک نہیں ہوتےجب تک یہ دو کام نہ کریں ایک تو ادارے اور گورنر سسٹم ٹھیک نہ کریں دوسرا انسانوں پر پیسہ خرچ نہ کریں آپ جب گورنمنٹ ہاسپٹل کو ٹھیک کرتے ہیں یا جو ہم نے خیبر پختونخواہ میں ہیلتھ انشورنس بنائی ہے -آدھی بادی کے پاس ہیلتھ انشورنس ہے ایک خاندان کے پاس پانچ لاکھ روپے ہیں ہوتا کیا ہے کہ جب ایک غریب آدمی بیمار ہوتا ہے اور اس کو پیسے خرچ کرنے پڑتے جس کے لیے ہم نے ہیلتھ انشورنس دی ہے -گورنمنٹ سکولوں کو ٹھیک کرنا ہے - خیبرپختونخواہ میں دیڑھ لاکھ بچے پرائیویٹ سولوں سے گورنمنٹ سکولوں میں گئے ہیں ہم نے ٹیچرز بھی بھرتی کیے ہیں پیسے بچتے ہیں بنیادی ضروریات پوری کرنے سے -اب آپ بچے کو پرائیویٹ سکول میں بھیج رہے ہیں -بیمار ہو تو آپ اسے لے جا رہے ہیں پرائویٹ ہاسپٹل میں اس سے غربت بڑھتی ہے معاشرے میں -ایک بات پا کستانی قوم کو سمجھ جانی چاہیے کہ جدھر ان دونوں جماعتوں نے لاکر کھڑا کیا ہے پاکستان کو چھ ہزار ارب ہمارا قرضہ تھا 2008 میں ان دس سالوں میں پیپلز پارٹی کےدور میں قرضہ ہوا تیرہ ہزار ارب اور ن لیگ کے دور میں ہوا ستائیس ہزار ارب بیرونی قرضے ہوگئے ہیں ساٹھ ارب سے ستانوے ارب ٹرانسپورٹ پہنچ گئی ہے چوبیس ارب سے اٹھارہ اب مشرف کے دور میں انویسٹمنٹ دیکھیں اور اب دیکھیں -اب جب تک گورنر سسٹم ٹھیک نہیں ہوتا پاکستان میں انویسٹمنٹ نہیں آئے گی اب لوگ پاکستان سے جا کر دبئی اور دوسرے ملکوں میں صنعتیں لگا رہے ہیں ان سے پوچھیں کہ وہ ایسا کیوں کرتے ہیں کیونکہ وہاں بنیادی ضروریات ملتی ہیں جو یہاں نہیں ملتی "

متعلقہ خبریں