وہ وقت جب گریٹ لیڈر طیب اردگان نے اسرائیلی صدر کو تاریخی حقائق اور اسرائیلی ظلم و جبر سے ببانگ دہل آگاہ کیا تھا- پڑھئے

وہ وقت جب گریٹ لیڈر طیب اردگان نے اسرائیلی صدر کو تاریخی حقائق اور اسرائیلی ظلم و جبر سے ببانگ دہل آگاہ کیا تھا- پڑھئے

وہ وقت جب گریٹ لیڈر طیب اردگان نے اسرائیلی صدر کو تاریخی حقائق اور ... 17 مئی 2018 (14:48) 2:48 PM, May 17, 2018

صدر , آپ عمر میں بھی مجھ سے بڑے ہیں اور آپ کی آواز بھی میری آواز سے زیادہ بلند ہے . لیکن مجھے لگتا ہے کہ شاید آپ اپنے ضمیر کی عدالت میں مجرم قرار دئیے جا چکے ہیں . اور اس احساس جرم سے جان چھڑانے کے لیئے آپ کو اُونچی آواز اور طاقت ور الفاظ کا سہارا لینا پڑتا ہے

بہرحال آپ نے انسانوں کا قتل عام تو کیا ہے اور میں بھی ساحل پر دم توڑ جانے والے بچوں کی بےگور کفن لاشوں کو نہیں بھول پایا اور مجھے آپ کے ملک کے وہ سا بق وزیر اعظم بھی یاد ہیں کہ جب وہ ٹینکوں پر بیٹھ کر فلسطین میں داخل ہونےکے قابل ہوئے تو انھوں نے کہا کہ " آج ہماری خوشی کی کوئی انتہا نہیں ہے " .

صدر صاحب , جن لوگوں نے ٹینکوں میں سوار ہو کر فلسطین کی حدود کو پامال کیا تھا اور اپنے ظالمانہ عمل پر ان کا کہنا تھا کہ ہمیں کوئی شرمندگی نہیں ہم اپنے آپ سے پوری طرح مطمئن ہیں . جی ہاں ایسے لوگوں کو آپ نے اپنا وزیر اعظم بنایا تھا اور آج وہ آپ کے سابق وزیر اعظم ہیں,جناب صدر , آپ نےجو کچھ کہا اور لوگوں نے اس پر تالیاں بجائیں میرے نزدیک یہ ایک افسوسناک عمل ہے اور فلسطین کے مسئلے میں مرنے والوں کی تعداد بہت زیادہ ہے لٰہذا جن کاموں کے نتائج ایسے بھیانک ہوں میرے نزدیک یہ نہ صرف غلط ہے بلکہ انسانیت کی توہین بھی ہے

اس حوالے سے میرے پاس بہت سی یادا شتیں ہیں مگر بدقسمتی سے اتنا وقت نہیں کہ میں سب کچھ پیش کر سکوں میں صرف دو باتیں کرنا چاہوں گا

. مفہوم حکم ربی ہے کہ :

" کہ تم ہر گز نہ قتل کرو گئے مگر ہم غارت گری سے متعلق باتیں کر رہے ہیں " .

2* میرا دوسرا پوائنٹ یہ ہے کہ جلال الضمونی کا کہنا ہے کہ اسرائیلی ظلم و ستم اپنی تمام تر حدیں پارکر چکا ہے "

یہ بات کرنے والا کوئی عام آدمی نہیں ہے بلکہ آکسفورڈ یونی ورسٹی میں بین الااقوامی تعلقات پر بات کرنے والے ایک شعبے کاپروفیسر ہے

آپ کا بہت بہت شکریہ کیونکہ میرا نہیں خیال کہ اس کے بعد میں کبھی دوبارہ یہاں بلایا جاؤں گا .ٹھیک ہےآپ مجھے بولنے کی اجازت نہ دیں مگر یا د رہے , اسرائیلی صدر 25 منٹ تک گفتگوکرتے رہے اور آپ نے مھجے انکے مقابلے میں گفتگو کرنے کیلئے صرف آدھا وقت دیا