سایئنسدانوں نے انسانی جسم کا وہ حصہ بنا لیا کہ ہر کوئی حیران رہ گیا کہ واقعی ایسا بھی ممکن ہے

سایئنسدانوں نے انسانی جسم کا وہ حصہ بنا لیا کہ ہر کوئی حیران رہ گیا کہ واقعی ایسا بھی ممکن ہے

سایئنسدانوں نے انسانی جسم کا وہ حصہ بنا لیا کہ ہر کوئی حیران رہ گیا کہ واقعی ... 17 مئی 2018 (01:52) 1:52 AM, May 17, 2018

بیجنگ( ویب ڈیسک) سائنس قدر ترقی کر چکی ہے کہ اب سائنسدانوں نے انسانی اعضاءبھی لیبارٹری میں تیار کرنے شروع کر دیئے ہیں۔ کچھ عرصہ قبل اسرائیلی سائنسدانوں نے انسانی ٹانگ کی پنڈلی کی ہڈی لیبارٹری میں تیار کی تھی اور اب چینی سائنسدانوں نے بالکل اصلی کان تیار کرکے پیدائشی معذور بچوں کو لگا دیئے ہیں۔ ہندوستان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے یہ کام انہی بچوں کے بنیادی خلیات (Stem Cells)سے لیبارٹری میں تیار کیے ہیں -چھ سے 9 برس عمر کے یہ بچے مائیکروشیانامی مرض کا شکار تھے جس میں کان کا بیرونی حصہ نہیں بن پاتا یا اس کی شکل پیدائشی طو رپر مسخ ہوئی ہوتی ہے

ان میں سے ہر بچے کا صرف ایک کان متاثر تھا۔ اس کے لیے ٹشو انجینئرنگ اور پلاسٹک سرجری کے ماہرین نے کئی ماہ کی محنت کے بعد اصلی کان لیبارٹری میں ’اگا‘ کر انہیں لگا دیئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق ماہرین نے ان بچوں کے درست اور نارمل کان سے کرکری ہڈیوں کے خلیات لیے اور سیل کلچر عمل کے ذریعے پیٹری ڈش میں کاشت کیا۔ درست کان کے مکمل سکین کیے گئے اور تھری ڈی پرنٹر سے ان کا ایک ڈھانچہ بنایا گیا اور اس سانچے میں کان کے خلیات شامل کیے گئے جو عین اسی بچے کے درست کان کی شکل اختیار کرگئے۔ کان مکمل ہونے پر انہیں مریضوں کو لگادیا گیا اور تھوڑی بہت تراش خراش کے بعد وہ بالکل اصلی کان کی طرح دکھائی دینے لگے۔اگرچہ یہ کوششیں پہلے بھی ہوئی ہیں لیکن انسانوں میں پہلی بار ٹشو انجینئرنگ سے تیار کردہ کانوں کا یہ پہلا کامیاب تجربہ تھا۔ ان بچوں کو یہ لیبارٹری میں اگائے گئے کان لگائے 30ماہ کا عرصہ ہو چکا ہے اور تمام بالکل صحت مند ہیں

متعلقہ خبریں