کیا قندوز میں ہونیوالی جگہ پر طالبان موجود تھے؟طالبان ترجمان کے بیان نے افغان و امریکی فوج کے دعووں کی پول کھول دی۔

کیا قندوز میں ہونیوالی جگہ پر طالبان موجود تھے؟طالبان ترجمان کے بیان نے افغان و امریکی فوج کے دعووں کی پول کھول دی۔

کیا قندوز میں ہونیوالی جگہ پر طالبان موجود تھے؟طالبان ترجمان کے بیان نے ... 17 مئی 2018 (00:55) 12:55 AM, May 17, 2018

قندوز (ویب ڈیسک) کچھ روز قبل قندوز میں ایک مدرسے پر دستار بندی کے وقت امریکی و افغانی طیاروں کی جانب سے حملہ کیا گیا تھا جس میں بڑی تعداد میں حفاظ بچے شہید ھو گئے تھے جس پر پاکستان میں کافی حد تک غم و غصہ پایا جاتا ہے لیکن امریکی و افغان فوج یہ دعوی کر رہی تھی کہ اس میں بڑی تعداد میں طالبان مارے گئے۔

تفصیلات کیمطابق کچھ روز قبل قندوز میں ایک مدرسے پر دستار بندی کے وقت امریکی و افغانی طیاروں کی جانب سے حملہ کیا گیا تھا جس میں بڑی تعداد میں حفاظ بچے شہید ھو گئے تھے ۔

جب کہ دوسری جانب معرو ف تجزیہ نگار اوریا مقبول جا کے پروگرام حرف راز میں طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا تھا کہ انکے ساتھی اسطرح کی عوامی جگہوں پر نہیں جاتے اور احتیاط کرتے ہیں ۔انکا مزید کہنا تھا کہ شہید ھونیوالے معصوم بچے تھے۔

یاد رہے کہ اس حملے میں بڑی تعداد میں معصوم بچے شہید ھو گئے تھے۔

متعلقہ خبریں