پاکستان کو سیاست دانوں نے بنایا کسی ڈکٹیٹر نے نہیں۔ ہماری غلطیوں کی وجہ سے آدھا پاکستان الگ ہوگیا۔ اب ہمیں موجودہ ۔۔۔۔۔۔۔خورشید شاہ

پاکستان کو سیاست دانوں نے بنایا کسی ڈکٹیٹر نے نہیں۔ ہماری غلطیوں کی وجہ سے آدھا پاکستان الگ ہوگیا۔ اب ہمیں موجودہ ۔۔۔۔۔۔۔خورشید شاہ

پاکستان کو سیاست دانوں نے بنایا کسی ڈکٹیٹر نے نہیں۔ ہماری غلطیوں کی وجہ سے ... 17 جون 2018 (17:24) 5:24 PM, June 17, 2018

سکھر: پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما خورشید شاہ نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو سیاست دانوں نے بنایا کسی ڈکٹیٹر نے نہیں۔ ہماری غلطیوں کی وجہ سے آدھا پاکستان الگ ہوگیا، اب ہمیں موجودہ پاکستان کی حفاظت کرنا ہوگی۔خورشدی شاہ نے کہا کہ اب بھی ہماری غلطیوں کی وجہ سے وہی حالات پیدا ہو رہے ہیں۔ موجودہ الیکشن ملک کے لیے اہم ہے۔ نواز شریف کو مشورہ دیتا تھا وہ عمل کرتے تھے اور بچ جاتے تھے۔انہوں نے کہا کہ لوگ ہمیں فرینڈلی اپوزیشن کا طعنہ دیتے تھے۔ ڈکٹیٹر شپ کی وجہ سے ملک کمزور ہوگیا۔ پاکستان کو کبھی امریکا تو کبھی افغانستان دھمکی دیتا ہے۔انہوں نے کہا کہ گالم گلوچ سے سیاست نہیں چلتی اپنے کردار کو ظاہر کرو۔ سیاستدان کے قول و فعل میں فرق نہیں ہونا چاہیئے۔ ’سکھر کو تعلیم اور صحت کا حب بنائیں گے، عوام کو صاف پانی فراہم کرنے کے لیے کوشاں ہیں‘۔

یاد رہیکہ کل پیپلزپارٹی کے رہنماء خورشید شاہ نے کہا کہ امید ہے الیکشن صاف و شفاف ہوں گے، الیکشن سے پہلے پیپلزپارٹی کے خلاف ہمیشہ اتحاد بنتے ہیں، ایسے اتحاد پیپلزپارٹی کی مقبولیت کی واضح مثال ہیں۔عمران خان یوٹرن لیتے ہیں، ہمیشہ باؤنسر لگاتے ہیں، اس مرتبہ وہ خود باؤنسر کا شکار ہوگئے ہیں۔پیپلزپارٹی رہنما نے کہا کہ عمران خان یوٹرن لیتے ہیں، ہمیشہ باؤنسر لگاتے ہیں، اس مرتبہ وہ خود باؤنسر کا شکار ہوگئے ہیں، ان کے قول و فعل میں شروع سے ہی تضاد رہا ہے۔ نگران حکومت ثابت کرے کہ انتخاب شفاف ہوں۔ موجودہ حالات کے پیش نظر نگراں حکومت کو ثابت کرنا ہوگا۔ قوی امکان ہے کہ انتخابات مقررہ وقت پر ہوں گے۔ کالا باغ ڈیم کا معاملہ سیاسی ہے، سی سی آئی اجلاس میں جائے گا۔ کالا باغ ڈیم تکنیکی لحاظ سے دیکھا جائے، فیڈریشن کو خطرہ ہوسکتا ہے۔ ’عدالت کا کام کالا باغ ڈیم پر سیمینارز کروانا نہیں ‘۔

متعلقہ خبریں