اقوام متحدہ کی طرف سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق رپورٹ جاری کرنا خوش آئند ہے۔حافظ محمد سعید

اقوام متحدہ کی طرف سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق رپورٹ جاری کرنا خوش آئند ہے۔حافظ محمد سعید

اقوام متحدہ کی طرف سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق ... 17 جون 2018 (12:48) 12:48 PM, June 17, 2018

حافظ محمد سعیدنے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی طرف سے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق رپورٹ جاری کرنا خوش آئند ہے، بھارت مسئلہ کشمیر خود یواین میں لیکر گیا، اقوام متحدہ کشمیر میں ظلم و دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے کردار ادا کرے،  مقبوضہ کشمیر میںسینئر صحافی اور رائزنگ کشمیر کے ایڈیٹر شجاعت بخاری کا قتل بدترین دہشت گردی ہے، اقوام متحدہ کی رپورٹ پر بھارت سرکار کیخلاف آواز بلند کرتے ہی انہیں نشانہ بنا دیا گیا، بھارتی فوج تحریک آزادی کو بدنام کرنے کیلئے مذموم ہتھکنڈے استعمال کر رہی ہے،کشمیری قوم ماضی کی طرح اب بھی بھارتی سازشوں کا شکار نہیں ہو گی، رمضان المبارک کا سبق یہ ہے کہ مسلمان اپنی زندگیوں کو سیرت رسولؐ کے مطابق گزارنے کا پختہ عہد کریں۔

جمعہ کو جامع مسجد القادسیہ میں خطبہ جمعہ اور بعد ازاں مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعیدنے کہا کہ اقوام متحدہ کی رپورٹ میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی طرف سے ڈھائے جانے جن مظالم کا ذکر کیا گیا ہے حقیقت میں اس سے کہیں زیادہ انسانی حقوق کی پامالیاں ہورہی ہیں۔ روزانہ کشمیریوں کو شہید کیا جارہا ہے اور سازش کے تحت ان کی املاک برباد کی جارہی ہیں۔

یاد رہیکہ بھارتی آرمی چیف نے مقبوضہ کشمیر میں ناکامی کا اعتراف کرلیا، جتنے نوجوان مارتے ہیں، ان سے زیادہ تحریکِ آزادی میں شامل ہو جاتے ہیں۔ کشمیریوں کا خون رنگ لانے لگا ہے اور آخر کار بھارتی آرمی چیف جنرل بپن راوت نے بھی اس بات کو مان لیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں امن کو ایک موقع ملنا چاہیے اور اس کے لیے مذاکرات نہایت ضروری ہیں۔

بھارتی آرمی چیف جنرل بپن راوت نے دی اکانومک ٹائمز کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے مسئلے کے حل کے لیے مذاکرات کی حمایت کرتے ہیں، انھوں نے کہا کہ کشمیر میں امن کو ایک موقع دینا چاہیے۔ انکا مزید کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں اس سلسلے کو روکنے کے لیے کچھ کرنا ضروری ہے۔ہم در اندازی پر قابو پاسکتے ہیں لیکن کشمیری نوجوانوں پر نہیں۔ مذاکرات بہت ضروری ہیں،کوشش کرکے دیکھنی چاہیے اور مقبوضہ کشمیر میں امن کو ایک موقع ضرور ملنا چاہیے۔ ہم کشمیر میں انھیں مار رہے ہیں اور ان کی تعداد میں مزید اضافہ ہوتا ہے، ان کا اشارہ مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک آزادی کی طرف تھا۔

متعلقہ خبریں