حضورصلی اللہ علیہ وسلم کی قیادت میں اسلامی لشکر ابھی مکے میں داخل نہیں ہوا تھا کہ ایک صحابی نے ابو سفیان کو پکڑکر حضورصلی اللہ علیہ وسلم کے پاس لے آئے

حضورصلی اللہ علیہ وسلم کی قیادت میں اسلامی لشکر ابھی مکے میں داخل نہیں ہوا تھا کہ ایک صحابی نے ابو سفیان کو پکڑکر حضورصلی اللہ علیہ وسلم کے پاس لے آئے

حضورصلی اللہ علیہ وسلم کی قیادت میں اسلامی لشکر ابھی مکے میں داخل نہیں ہوا ... 16 مئی 2018 (15:24) 3:24 PM, May 16, 2018

حضورصلی اللہ علیہ وسلم کی قیادت میں اسلامی لشکر ابھی مکے میں داخل نہیں ہوا تھا کہ ایک صحابی نے ابو سفیان کو پکڑکر حضورصلی اللہ علیہ وسلم کے پاس لے آئے ۔ یہ ابوسفیا ن وہی تھے جنھوں نے مسلمانوں کے ساتھ باقاعدہ جنگ کی تھی اور حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے بد ترین دشمن رہے تھے ۔ حضرت عمر نے ابوسفیان کو دیکھ کر حضورصلی اللہ علیہ وسلم سے اجازت طلب کی کہ اس دشمن اسلام کا سر اڑا دے لیکن رحمت عالمصلی اللہ علیہ وسلم نے انھیں سختی سے منع فرمایا ۔ ابوسفیا ن نے معافی طلب کی تو حضورصلی اللہ علیہ وسلم نے نا صرف ان کے سارے جرم معاف فرما دیے بلکہ یہ اعلان بھی فرما دیاکہ جو شخص ابو سفیان کے گھر میں پناہ لے گا اسے بھی معاف کر دیا جائے گا ۔ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کا حسن سلوک دیکھ کر ابوسفیان مسلمان ہو گئے۔

متعلقہ خبریں