شاعر: نامعلوم:سارے شہر میں کل عید تھی  .....بارش میں بھیگی تھی کہ شاید روئی تھی.....  بہت اداس عید تھی 

شاعر: نامعلوم:سارے شہر میں کل عید تھی  .....بارش میں بھیگی تھی کہ شاید روئی تھی.....  بہت اداس عید تھی 

شاعر: نامعلوم:سارے شہر میں کل عید تھی  .....بارش میں بھیگی تھی کہ شاید روئی ... 16 جون 2018 (18:57) 6:57 PM, June 16, 2018

سارے شہر میں کل عید تھی  

بارش میں بھیگی تھی کہ شاید روئی تھی  

بہت اداس عید تھی  

اسے بھی شاید کسی کی تمنائے دید تھی  

بے کل سی میرے پاس گھر کے آس پاس 

پریشان پھر رہی تھی  

دل پر پڑے آہنی قفل

در پر دکھائی دیے ہوں گے 

جب آنگن میں جھانکا تو 

بے حنائی ہاتھ ,بنا کسی کے ساتھ 

نہ گھر کی سجاوٹ, نہ رنگیں پوشاک 

دیکھ کر اس نے یہ سب سوچا ہو گا 

شاید اس گھر میں سپنے سجاتا کوئی نہیں

باہر سے آتا کوئی نہیں 

اور کسی کی یاد میں کھو کر 

اب عید مناتا کوئی نہیں 

متعلقہ خبریں