عید کے روز مدینہ منورہ میں 3 پردیسی پاکستانی جہان فانی سے کوچ کر گئے۔افسوسناک خبر آ گئی

عید کے روز مدینہ منورہ میں 3 پردیسی پاکستانی جہان فانی سے کوچ کر گئے۔افسوسناک خبر آ گئی

عید کے روز مدینہ منورہ میں 3 پردیسی پاکستانی جہان فانی سے کوچ کر گئے۔افسوسناک ... 16 جون 2018 (15:09) 3:09 PM, June 16, 2018

مدینہ : عید کے روز مدینہ منورہ میں 3 پاکستانی خوفناک ٹریفک حادثے میں جان کی بازی ہار گئے ۔ عرب ذرائع ابلاغ سے موصول ہونے والی تفصیلات کے جمعہ کو عید کے روز مدینہ منورہ میں افسوسناک واقعہ پیش آیا۔ مدینہ منورہ میں پیش آنے والے خوفناک حادثے میں 3 پاکستانی شخص اپنی جان کی بازی ہار گئے ۔ ان پاکستانیوں کا تعلق پاکستان کے صوبہ سندھ سے ہے۔ عید کی تیاریوں میں مصروف ان دونوں پاکستانیوں کے اہل خانہ پر یہ خبر قیامت بن کر گری ہے۔

مدینہ میں جاں بحق ہو   نے والے پاکستانیوں کی میت کو جلد پاکستان لانے کیلئے انتظامات کیے جا رہے ہیں۔

دوری جانب مسجد الحرام میں ایک ہفتے کے دوران خود کشی کا دوسرا واقعہ ، ایک اور شخص نے چھلانگ لگا کر خود کشی کر لی ہے۔ عرب میڈیا سے موصول ہونے والی تفصیلات کے مطابق مکہ مکرمہ میں مسجدالحرام میں ایک شخص نے مطاف میں چھلانگ لگا کر خودکشی کر لی۔ سعودی میڈیا کے مطابق ایشیائی شخص نے حرم شریف کی بالائی منزل سے گزشتہ روز صبح چھلانگ لگا کر خود کشی کی۔سعودی عرب کے مقامی میڈیا کے مطابق نیچے گرنے سے مطاف میں موجود ایک شخص بھی زخمی ہوا جسے فوری ہسپتال لے جایا گیا۔ مسجد الحرام میں ایک ہفتے کے اندر خودکشی کا دوسرا واقعہ ہے۔

یاد رہیکہ اس سے قبل بھی سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں ایک شخص مسجد الحرام میں چھت سے کود کر خودکشی کرتا دکھائی دے رہا ہے ۔جسکے فوری بعد اسکو ریسکیو کیا گیا اور ہسپتال پہنچایا گیا۔وہاں موجود لوگوں میں بھی پریشانی دیکھی گئی ہے۔ یہ شخص فرانسیی بتایا جا رہا ہےاور اسکی خودکشی کی وجہ بھی سامنے نہیں آ سکی۔سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی "واس" نے مکہ ریجن پولیس کے ترجمان کے حوالے سے بتایا ہے کہ جمعہ کی شب تراویح کے وقت حکام کو اطلاع ملی کہ ایک نامعلوم غیر ملکی شخص مسجد الحرام کی بالائی منزل سے مطاف کے صحن میں کود گیا۔ زمین پر گرتے ہی اس کی وفات ہو گئی۔متوفی کا جسد خاکی ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جہاں اس کی شناخت اور بالائی منزل سے کودنے کے اسباب جاننے کے لئے تحقیقات جاری ہیں۔ حکام اس بات پر حیرت کا اظہار کر رہے ہیں کہ متوفی نے بالائی منزل پر آہنی جنگلہ ہونے کے باوجود کیونکر چھلانگ لگائی۔

متعلقہ خبریں