جب ذکر محمد ہو تا ہے رحمت کی گھٹائیں چھاتی ہیں..... سرکار مدینہ کے دم سے دنیا میں بہاریں آتی ہیں

جب ذکر محمد ہو تا ہے رحمت کی گھٹائیں چھاتی ہیں..... سرکار مدینہ کے دم سے دنیا میں بہاریں آتی ہیں

جب ذکر محمد ہو تا ہے رحمت کی گھٹائیں چھاتی ہیں..... سرکار مدینہ کے دم سے دنیا ... 15 جون 2018 (17:18) 5:18 PM, June 15, 2018

 

 

 

 

 

 

جب ذکر محمد ہو تا ہے رحمت کی گھٹائیں چھاتی ہیں

سرکار مدینہ کے دم سے دنیا میں بہاریں آتی ہیں

خورشید نبوت جو آیا جیضان نبوت بُر لایا

خورشید کی کرنیں اب ہر دم انوار خدا بر ساتی ہیں

اخلاق ودیانت کی شمعین آقا نے مرے روشن جو روشن کیں

ادراک کو حیراں کرتی ہیں نظروں میں ضیاء چمکاتی ہیں

اعجاز نما پیکر ان کا ، چہرہ ہے کُھلا مُصحف جیسا

کردار بلند ایسا جس سے اقوام ہدایت پاتی ہیں

جب درد محبت اٹھتا ہے ذکر نبی کرلیتا ہوں

یادیں ہی نبی کی اس دل کا سامان تسلی لاتی ہیں

بطحا کے نظاروں کا دلکش منظر ہی بسا ہے آنکھوں میں

جنت کی بہاریں بھی جس پر قربان وفدا ہو جاتی ہیں

جب نعت محمد لکھتے ہیں راتوں میں شعیبؔ اُن کا عاشق

محسوس وہ کرتے ہیں ساری ظلمات بکھرتی جاتی ہیں

متعلقہ خبریں