تین ہزار امراض ایسے ہیں جن میں پیاز کا استعمال فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔پیاز کے فوائد پڑھئے

تین ہزار امراض ایسے ہیں جن میں پیاز کا استعمال فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔پیاز کے فوائد پڑھئے

تین ہزار امراض ایسے ہیں جن میں پیاز کا استعمال فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔پیاز ... 13 جون 2018 (12:44) 12:44 PM, June 13, 2018

پیاز ہیضہ اور طاعون کی وباء کے زمانے میں بطور غذا استعمال کرنا نہایت ہی مفید ہے۔ کہا جاتا ہے کہ کسی دوسرے ملک میں داخل ہونے کے بعد سب سے پہلے وہاں کی پیاز کھا لینی چاہیے۔ اس سے یہ فائدہ ہوتا ہے کہ اگر اس ملک میں کوئی وبا ء پھیلی ہوئی ہے تو اس سے محفوظ رہا جا سکتا ہے۔

یہ ایک عام سبزی ہے لیکن اس کے بنا بہت سے کھانے نہیں بنائے جاسکتے۔ پیاز کھانوں کا ذائقہ ہی نہیں بڑھاتی بلکہ یہ صحت کی محافظ بھی ہے۔ ایک اندازے کے مطابق تقریباً تین ہزار امراض ایسے ہیں جن میں پیاز کا استعمال فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔ پیاز کی تاثیر بعض تکلیف دہ امراض میں ایسی سود مند ثابت ہوتی ہے کہ جدید اور قیمتی ادویات کی بھی ضرورت نہیں پڑتی۔

ضرور پڑھیں:بھارتی جوہریوں نے 6690 ہیروں سے انگوٹھی بنا کر نیا عالمی ریکارڈ بنا لیا۔قیمت اتنی کہ دنیا حیران

ضرور پڑھیں:جب میگن میرکل نے اپنے شوہر شہزادہ ہیری کے ہاتھ کو چھونے کی کوشش کی تو برطانیہ میں بھونچال آ گیا ،مگر ایسا کیوں ہوا وجہ جانکر آپ بھی سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے۔

ضرور پڑھیں:جینز پہننے سے منع کیوں کیا؟ ایک عورت نے اس کی چار بیٹیوں کیساتھ ملکر شوہر کیساتھ وہ کر ڈالا کہ انسانیت شرما جائے

ضرور پڑھیں:میزیں کھانا کھانے کیلئے ہوتی ہیں لیکن جاپان میں میزیں الٹنے کو کھیل بنا لیا گیا ہے،جاپانی ایسا کیوں کرتے ہیں،وجہ انتہائی دلچسپ

پیاز کے جسم انسانی پر مختلف اثرات مرتب ہوتے ہیں ہم اسے مسالاوغیرہ کی صورت میں سالن کا ذائقہ بڑھانے کی غرض سے استعمال کرتے ہیں لیکن اِس کے طبّی خواص سے ناواقفیت کی بنا پر اِس کے مکمل فوائد سے استفادہ نہیں کرپاتے۔

پیاز ایک مفید غذا ہے جس میں فاسفورس کے علاوہ فولاد بھی پایا جاتا ہے جو ہمیں صحت مند رکھنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ پیاز کو سلاد کے طور پر اپنی روزہ مرہ خوراک کے ساتھ ضرور استعمال کریں کیونکہ دال یا سبزی کے ساتھ کھانے سے خون میں شکر کی سطح کم رہتی ہے جس سے شوگر جیسی موذی بیماری سے بچا جا سکتا ہے۔

* پیاز کا سوپ یا کچی پیاز ، فلو، بخار، نزلے، زکام میں بہت فائدہ مند ہے۔ بند نزلے کو کھولنے میں پیاز مدددیتی ہے۔ پیاز دل کے مریضوں کے لیے بھی بہت مفید ہے یہ خون کو منجمد ہونے سے روکتی ہے۔ اس میں ایک قدرتی خصوصیت ہوتی ہے جس کے ذریعے وہ خون کے کلوٹس کو تحلیل کر کے خون کو گاڑھا ہونے سے بچاتی ہے۔ اس وجہ سے دل کے دورے سے محفوظ رہا جا سکتا ہے۔ پیاز میں جراثیم سے جنگ کرنے کی خاص صلاحیت ہوتی ہے۔

ضرور پڑھیں:شہری کو موبائیل نے سرپرائیز دے دیا.شہری کھانا کھانے میں مصروف تھا کہ اچانک ۔۔۔۔

ضرور پڑھیں:سال 2050 تک ہمارے سمندروں میں پلاسٹک کی تعداد مچھلیوں سے زیادہ ہو جائے گی۔دل دہلا دینے والی رپورٹ منظر عام پر آ گئی

ضرور پڑھیں:روم کے جابر اور سنگدل حکمران نیرو کی کہانی-وہ اپنی تسکین کیلئے کیسے کیسے کھیل کھیلتا تھا جانئے دلچسپ بادشاہ کے مزاج

ضرور پڑھیں:کالی عورت:صورت خوبصورت نہیں ہوتی یہ سیرت ہوتی ہے جو ہمیں خوبصورت بناتی ہے-ایک کہانی ایک سبق

ضرور پڑھیں:اگر میں ہار جاتا تو یہ کہا جاتا کہ مہابت جنگ گھبراہٹ میں جوتے چھوڑ کر بھاگ گیا ہے-یہ تاریخی الفاظ بہادر مسلمان حکمران مہابت جنگ کے ہیں-پڑھیے سبق آموز قصہ

پیاز کو پکا کر کھلانے سے یرقان، پرانی کھانسی،سینے کی جلن اور بلغم کے انجماد میں خاص طور پر فائدہ ہوتا ہے۔ سرکہ میں اگر اس کا اچار بنا کر استعمال کیا جائے تو تلی کے درد میں فائدہ ہوتا ہے۔ صفراوی متلی وغیرہ دور ہوتی ہے۔ آنکھ کی سوزش،سفیدی اور موتیا بند کی ابتداء میں پیاز کا عرق شہد میں ملا کر آنکھ میں لگانے سے اکثر فائدہ ہوتا ہے۔ پیاز کوکوٹ کر 4 سے ساڑھے چار تولہ مقدار میں دینے سے بچھو کے زہر کا اثر زائل ہوجاتا ہے۔

عرق پیاز کو رائی کے تیل میں ملا کر جوڑوں پرمالش کرنے سے گنٹھیا میں فائدہ ہوتا ہے۔ اگر پیاز باقاعدہ کھائی جائے تو دانتوں کی جڑوں میں تعفن پیدا نہیں ہوتا۔ ہسٹیریا اور مرگی کے مریضوں کو ہوش میں لانے کیلئے تیز چیزیں مثلاً ایمونیا وغیرہ سنگھانے کا رواج رہا ہے طب یونانی میں اس غرض کیلئے لخلخہ پیاز سنگھایا جاتا ہے۔ ماہرین کی رائے کے مطابق پیاز کو کوٹ کر سنگھانا زیادہ مفید ہے۔ سونگھنے سے سردرد جاتا رہتا ہے اور زکام کی شدت کم ہوجاتی ہے۔ پیاز کی بو اس کی سب سے بڑی خرابی ہے لیکن یہی چیز پیٹ میں پہنچ کر آنتوں کے جراثیم کے خاتمے کا باعث ہوتی ہے۔

متعلقہ خبریں