ریاست تو محترم ہے لیکن شہری محترم نہیں، جس کے ہاتھ میں ڈنڈا ہے صرف وہی محترم ہے۔ فوج ایک ادارہ ہے اس کا ہم احترام کرتے ہیں لیکن ۔۔۔۔۔۔۔مولانا فضل الرحمان

ریاست تو محترم ہے لیکن شہری محترم نہیں، جس کے ہاتھ میں ڈنڈا ہے صرف وہی محترم ہے۔ فوج ایک ادارہ ہے اس کا ہم احترام کرتے ہیں لیکن ۔۔۔۔۔۔۔مولانا فضل الرحمان

ریاست تو محترم ہے لیکن شہری محترم نہیں، جس کے ہاتھ میں ڈنڈا ہے صرف وہی محترم ... 13 جون 2018 (04:17) 4:17 AM, June 13, 2018

اسلام آباد:جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ریاست تو محترم ہے لیکن شہری محترم نہیں، جس کے ہاتھ میں ڈنڈا ہے صرف وہی محترم ہے۔جمعیت علمائے اسلام ( ف ) کے سربراہ فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ادارے سیاستدانوں کی کھلم کھلا کردار کشی کرتے ہیں جس سے ریاست کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔ مولانا فضل الرحمان نے اصغرخان عمل درآمد کیس میں چیف جسٹس کے الفاظ دہراتے ہوئے کہا کہ ریاست ماں ہے اس کا تحفظ اور احترام ہونا چاہیے، ایسی کوئی بات یا کام نہ کیا جائے جس سے ریاست کو نقصان ہو۔

تفصیلات کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ادارے سیاستدانوں کی کھلم کھلا کردار کشی کرتے ہیں ، سیاستدانوں کو دہشتگرد کہا جاتا ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہم میں ایسی کم زوریاں نہیں ہیں جو کسی دوسرے میں نہ ہوں، ہم نے ایک ہی لفظ سیکھا ہے کہ عوام کے سامنے جواب دینا ہے۔جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ کا کہنا تھا کہ صحافت کے حوالے سے بہت سے سیمینارز میں حصہ لیا، اور ہمیشہ صحافیوں کے حقوق کے لیے آواز میں آواز ملائی۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، ان کا کہنا تھا کہ سیاست اور صحافت کا چولی دامن کا ساتھ ہے، دنیا میں جہاں جمہوریت ہے وہاں آزاد صحافت بھی ہے، جہاں جمہوریت نہیں وہاں آزاد صحافت بھی نہیں۔انھوں نے کہا کہ سیاستدانوں کو کرپٹ یا دہشت گرد کہا جا رہا ہے ، ایسا کوئی کام نہ کیا جائے جس سے ریاست کو نقصان پہنچ سکتا ہو، فضل الرحمان نے کہا ہے کہ فوج ایک ادارہ ہے اس کا ہم احترام کرتے ہیں لیکن عوامی مینڈیٹ کی توہین نہیں ہونی چاہئے ۔

متعلقہ خبریں