جرمنی مکمل طور پر روس کے کنٹرول میں آگیا ہے،ٹرمپ

جرمنی مکمل طور پر روس کے کنٹرول میں آگیا ہے،ٹرمپ

جرمنی مکمل طور پر روس کے کنٹرول میں آگیا ہے،ٹرمپ 11 جولائی 2018 (22:01) 10:01 PM, July 11, 2018

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا ہے کہ ایک گیس پائپ لائن منصوبے سے جرمنی مکمل طور پر روس کے کنٹرول میں آگیا ہے اور اس کا دست ِنگر بن گیا ہے۔

انھوں نے یہ بات برسلز میں معاہدہ شمالی اوقیانوس کی تنظیم نیٹو کے سربراہ اجلاس سے قبل بدھ کو ناشتے کے موقع پر کہی ہے۔وہ نارڈ اسٹریم 2 پائپ لائن کا حوالہ دے رہے تھے ۔اس کے ذریعے روس سے جرمنی کے شمال مشرقی بالٹک ساحلی علاقے کو گیس مہیا کی جائےگی۔اس سے مشرقی یورپ کے ممالک پولینڈ اور یوکرین وغیرہ کو بائی پاس کردیا گیا ہے اور روس براہ راست جرمنی کو دُگنا مقدار میں گیس مہیا کرسکے گا۔مریکا اور یورپی یونین کے رکن ممالک روس سے جرمنی تک زیرِ سمندر بچھائی جانے والی اس بڑی پائپ لائن کی مخالفت کررہے ہیں۔انھیں یہ خدشہ لاحق ہے کہ اس سے ماسکو کو مغربی یورپ کے ممالک پر زیادہ اثر ورسوخ حاصل ہوجائے گا۔صدر ٹرمپ نے ناشتے پر گفتگو کرتے ہوئے جرمنی کو مخاطب ہوکر کہا کہ’’ جب آپ روس کے ساتھ سودے طے کررہے ہیں تو پھر امریکا کو آپ کا تحفظ کیونکر کرنا چاہیے۔آپ بتائیے کیا یہ مناسب ہے؟‘‘انھوں نے کہا کہ ’’ جہاں تک مجھے تشویش لاحق ہے، جرمنی اس وقت مکمل طور پر روس کے قبضے میں ہے‘‘۔انھوں نے نیٹو پر زور دیا کہ وہ اس معاملے پر غور کرے۔ آج صدر ٹرمپ کی جرمن چانسلر انجیلا سے بھی ملاقات متوقع ہے۔

دوسری جانب نیٹو کے سیکریٹری جنرل جینز اسٹولٹنبرگ نے امریکی صدر کے بیان سے پیدا ہونے والی تپش کو سربراہ اجلاس سے کم کرنے کی کوشش کی ہے اور ان کا کہنا ہے کہ نیٹو کے رکن ممالک اپنے درمیان اختلافات کے باوجود مل جل کر کام کرنے کی صلاحیت کے حامل ہیں۔

متعلقہ خبریں