اگر ن لیگ میں ہوتا تو نوازشریف کے استقبال کیلئے نہ جاتا، میں نوازشریف کے استقبال کیلئے بالکل نہیں جاؤں گا۔چوہدری نثار

اگر ن لیگ میں ہوتا تو نوازشریف کے استقبال کیلئے نہ جاتا، میں نوازشریف کے استقبال کیلئے بالکل نہیں جاؤں گا۔چوہدری نثار

اگر ن لیگ میں ہوتا تو نوازشریف کے استقبال کیلئے نہ جاتا، میں نوازشریف کے ... 10 جولائی 2018 (17:55) 5:55 PM, July 10, 2018

چوہدری نثار نے نیوزکانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ میرے انتخابی نشان سے متعلق ایک ماحول بنایا گیا، مجھ پر تنقید کرنے کیلئے چند سیاسی لوگوں کو بہانہ چاہیے شہبازشریف سے میرا کوئی رابطہ نہیں ، شہبازشریف سے ملاقات پرانی بات ہے، وہ یاد نہیں ۔ میرے نوازشریف سے 34 سال پرانے تعلقات ہیں، اگر ن لیگ میں ہوتا تو نوازشریف کے استقبال کیلئے نہ جاتا، میں نوازشریف کے استقبال کیلئے بالکل نہیں جاؤں گا۔

سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان اور این اے 59 سے آزاد امیدوار چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ الیکشن سے پہلے آصف زرداری کوگرفتار نہیں کرنا چاہیے،الیکشن سے پہلے ایسا کوئی قدم نہیں اٹھانا چاہیے جس سے الیکشن متنازع ہوجائے، جب میرے سیاسی مخالف کوگرفتار کیا گیا تواس کی بھی مذمت کی تھی۔ انہوں نے آج یہاں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ جیپ کا نشان لینا میرا پنا فیصلہ تھا۔

جیپ کا نشان کسی گروپ کا نشان نہیں ہے۔ نہ ہی میں کسی جیپ گروپ کاحصہ ہوں۔اگر آزادگروپ بنانا ہوتا توایک سال یا 6مہینے پہلے بنالیتا بہت سے لوگ موجود تھے۔جنوبی پنجاب کے کچھ لوگوں نے شیرکا نشان واپس کرکے جیپ کا نشان لیا، معلوم نہیں جیپ کے نشان کوکیوں اچھالا جارہا ہے۔چند لوگوں کوتوتنقید کرنے کیلئے بہانہ چاہیے۔میرے انتخابی نشان پرمنفی پروپیگنڈے پرافسوس ہوا ہے۔

متعلقہ خبریں