پاکستان کا سعودی عرب کے ساتھ اس کے کینیڈا سے سفارتی تنازع میں مکمل یک جہتی کا اظہار

پاکستان کا سعودی عرب کے ساتھ اس کے کینیڈا سے سفارتی تنازع میں مکمل یک جہتی کا اظہار

پاکستان کا سعودی عرب کے ساتھ اس کے کینیڈا سے سفارتی تنازع میں مکمل یک جہتی کا ... 10 اگست 2018 (15:10) 3:10 PM, August 10, 2018

پاکستان نے سعودی عرب کے ساتھ اس کے کینیڈا سے سفارتی تنازع میں مکمل یک جہتی کا اظہار کیا ہے اور اس کو اپنی حمایت کا یقین دلایا ہے۔

پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے جمعرات کو اپنی ہفتہ وار نیوز بریفنگ میں کہا کہ پاکستان دونوں ممالک کے درمیان سفارتی بحران کو بڑی تشویش کی نگاہ سے دیکھ رہا ہے اور اس نے اس معاملے میں سعودی عرب کے ساتھ مکمل یک جہتی کا اظہار کیا ہے۔انھوں نے کہا کہ ’’ پاکستا ن نے ہمیشہ ریاستوں کی خود مختاری کی حمایت کی ہے اور وہ دوسری ریاستوں کے داخلی امور میں عدم مداخلت کے اصول پر عمل پیرا ہے‘‘۔ترجمان نے واضح کیا کہ ’’یہ دونوں پہلو اقوام متحدہ کے منشور میں بھی وضع کیے گئے ہیں۔یہ بین الاقوامی قانون کے بنیادی اصولوں میں سے ہیں اور یہ ریاستوں کے درمیان پُر امن اور دوستانہ تعلقات کی بنیاد فراہم کرتے ہیں‘‘۔ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ ’’ ہم اسلامی تعاون تنظیم ( او آئی سی ) کے سیکریٹری جنرل کے اس بیان سے مکمل اتفاق کرتے ہیں کہ سعودی عرب کا علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر بھرپور احترام کیا جاتا ہے اور پاکستا ن کے عوام اس سے اٹوٹ انگ رشتے میں جڑے ہوئے ہیں‘‘۔ان کا کہنا تھا کہ ’’پاکستان سعودی عرب کی خود مختاری کے تحفظ میں اس کے ساتھ کھڑا ہے۔ یہ اس کا اصولی موقف ہی نہیں ، بلکہ یہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان قریبی تعلقات پر مبنی ہے‘‘۔

واضح رہے کہ سعودی عرب کی وزارت خارجہ نے گذشتہ اتوار کو کینیڈا کی حکومت کے بعض متنازع بیانات کے ردعمل میں اوٹاوا سے اپنے سفیر کو مشاورت کے لیے واپس بلا لیا تھا اور الریاض میں متعیّن کینیڈا کے سفیر کو ناپسندیدہ شخصیت قرار دے دیا تھا اور انھیں چوبیس گھنٹے میں ملک سے واپس چلے جانے کا حکم دیا تھا۔سعودی عرب نے کینیڈا کی جانب سے ’’سول سوسائٹی کے کارکنان‘‘ کے بارے میں بیانات کے بعد اس کے ساتھ تجارت اور سرمایہ کاری کے شعبوں میں تمام نئے سمجھوتوں اور معاہدوں کو منجمد کردیا تھا ۔اس نے کینیڈا کے لیے تمام تعلیمی وظائف ، تربیتی اور فیلوشپ پروگراموں کو بھی معطل کردیا تھا۔ اس ملک میں زیر تعلیم تمام سعودی طلبہ اور زیر علاج تمام مریضوں کو اب دوسرے ممالک میں منتقل کیا جارہا ہے۔

متعلقہ خبریں