تجزیہ نگار ہارون رشید کا عمران خان کی سابقہ بیویوں ریحام خان اور جمائمہ کے درمیان زبردست تجزیہ

تجزیہ نگار ہارون رشید کا عمران خان کی سابقہ بیویوں ریحام خان اور جمائمہ کے درمیان زبردست تجزیہ

تجزیہ نگار ہارون رشید کا عمران خان کی سابقہ بیویوں ریحام خان اور جمائمہ کے ... 09 جون 2018 (12:12) 12:12 PM, June 09, 2018

تجزیہ نگارہارون رشید کا کہنا ہے کہ :"جب عمران خان کا جمائمہ کے ساتھ طلاق کا مسئلہ چل رہا تھا تو انہوں نے مجھ سے مشورہ کیا انہوں نے کہا کہ اب رشتہ نبھ نہیں سکتا -تو میں نے کہا ایک طریقہ ہے اگر اس کا ختم ہونا ہی مقدر ہے تو اس کو اس طرح سے ختم نہیں ہوناچاہیے کہ کسی قسم کی کوئی تلخی پیدا ہو انہوں نے کہا کیا طریقہ ہے میں نے کہا ایک صاحب کے پاس چلتے ہیں اب ان صاحب کی اجازت نہیں ہے اس لیے میں ان کا نام نہیں لیتا بہت دانا آدمی ہیں تو آدھے گھنٹے تک ان اے میری موجودگی میں گفتگو ہوئی پھر میں آدھے گھنئے بعد اٹھ گیا کہ ممکن ہے کوئی اتی بات کرنا چاہتے ہوں تو پھر انہوں نے دو تہن باتیں کہی کہ آپ کے بچے مسلمان رہیں گے اور یہ جو آپ کا طرز عمل ہے تلخی نہیں ہو گی اور انہوں نے کہا کہ آپ کے اور ان کے انداز فکر میں یہ فرق ہے جس کی وجہ سے نبھ نہیں سکتی او انہوں نے جمائمہ کے بارے میں بہت کھل کے بات کی - اور عمران نے جمائمہ کے بارے میں کوئی غلط بات نہیں کی -

انہوں نے کہا کہ میں قصور وار ہوں کہ چار ماہ کی انتخابی مہم میں میں صرف پانچ دفعہ میانوالی سے وہاں گیا انہوں نے کہا اگر حالات مختلف ہوتے تو نبھ جاتی اب نہیں نبھ سکتی اور اللّٰہ نے اس کی اجازت دی ہے عمران نے تین بلین ڈالر سرنڈر کیے وکیل نے کہا اگر رک جائیں تو تین بلین ڈالر مل سکتے ہیں اور پھر میرا تو ان سے دھرنے کی وجہ سے اختلاف ہوا اس سے پہلے ہمارے درمیان بے تکلفی تھی ہر بات مجھ سے شیئر کرتا تھا - تو وہ انتہائی تکریم سے ذکر کرتا تھا ان کا ان کی والدہ کا بچوں کے ٹیلی فون آتے تھے بچوں سے بھی میں ملا ان کو دیکھا کئی چیزوں میں مشورہ بھی کیا ماحول اچھا رہا وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بہتر ہوتا گیا خاندان میں سی ایک شخص نے برا نہیں مانا اس کے بھائیوں نے برا نہیں مانا اس کی والدہ یہاں آتی تھیں ٹھہرتی تھیں علیحدگی کے بعد اس نے مجھے فون کیا دھرنے کے بعد اس نے مجھے کھانے پہ بلایا تھا کہا بھائی کیوں ناراض ہو میں نے کہا ناراضی تو کوئی نہیں بس رائے کا اختلاف ہے تو اس نے مجھے فون کیا اور کہا کہ میں نے بڑا دکھ بھرا وقت گزارا ہے ریحام خان کے ساتھ اس کے کردار کے بارے میں کوئی بات نہیں کی تو میں نے کہا اللّٰہ کے بندے اگر مشورہ کر لیتے تو دو چار چیزیں اور سامنے آجاتیں چلو مجھ سے نہ کرتے کسی اور سے کر لیتے اگر مشورہ کر لیتے تو اس کی نوبت ہی نہ آتی لیکن انہوں نے جلدی لیکن اب دیکھیں قصہ ہو گیا ختم یہ اپنے گھر پہ وہ اپنے گھر پہ آپ کو کوئی جانتا نہیں تھا پھر چلیں یہ ایک اختلاف تھا کتاب وہ لکھیں اور عمران خان کے سیاسی جو اختلاف ہیں وہ لکھیں لیکن اپنے گھر کے بند کمرے کی گفتگو اس طرح بیان کرنا انہیں اس بات کا احساس نہیں ہے کہ یہ زندگی بہت کم ہے انہیں اللّٰہ کےپاس جانا ہے -"

متعلقہ خبریں