نیب نے سابق وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو صاف پانی کمپنی کرپشن کیس میں ملوث ہونے کی وجہ سے  عدالت میں   طلب کر لیا .کیا سوالا ت کئے جائیں گے جانئے۔

نیب نے سابق وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو صاف پانی کمپنی کرپشن کیس میں ملوث ہونے کی وجہ سے  عدالت میں   طلب کر لیا .کیا سوالا ت کئے جائیں گے جانئے۔

نیب نے سابق وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو صاف پانی کمپنی کرپشن کیس میں ملوث ... 08 جون 2018 (18:11) 6:11 PM, June 08, 2018

نیب نے آج  شہباز شریف کو صاف پانی کمپنی کرپشن کیس میں ملوث ہونے کی وجہ سے  عدالت میں   طلب کر لیا . شہباز شریف عدالت میں پیش ہو ں گے . نیب کی جانب سے شہباز شریف سے صاف پانی کمپنی کے متعلق  مندرجہ ذیل سوالات کئے جائیں گے; 

  1. کسی انتظامی فیزییلیٹی کے  بغیر صاف پانی کمپنی کیسے بنائی گئی .2. پنجاب ہیلتھ انجئیرنگ ڈیپارٹمنٹ کو کیوں نظر انداز کیا گیا .3. بغیر سفارشات کے صاف پانی کے الگ منصوبے کیوں بنائے گئے . 4.میرٹ کے برعکس اے  سی ای  کنسلٹ کیوں مُقرر کیا گیا . 5.جنوبی پنجاب میں کے ایس بی پمپس کمپنی کو  35% مہنگے ٹھیکے کیوں دئیے گئے . 6.کس کی ہدایت پر جرمن فرم میشز, کمپنی کی خدمات لی گئیں . 7.بورڈ آف ڈائریکٹ کے باوجود پتوکی میں کنٹریکٹ کیوں منسوخ کیا گیا . 8. ریسرچ کے بغیر غیر مُلکی کمپنیوں کو ٹھیکے دینے کیلئے کیوں دباؤ ڈالا گیا  .9 .من پسند ٹھیکیداروں کو نوازنے کے احکامات کیوں دئیے گئے . 10 . صاف پانی کے نام پر دبئی اور تھائی لینڈ کے دورے کیوں کئے . 11. افسران کومراعات , تنخواہیں اور کروڑوں کی گاڑیاں کیوں دی گئیں . 12. صاف پانی کی فراہمی کیلئے بحثیتِ وزیرِ اعلیٰ کیا اقدامات کئے . 

56 کمپنیز اسکینڈل کے دوران چیف جسٹس اوروزیرِ اعلیٰ  شہباز شریف کو سوال  کرتے  ہوئے مخاطب کیا کہ  آپ قومی خزانے کے امین ہیں . کمپنیوں میں بھاری تنخواہوں پر تقرریاں کیوں کیں . شہباز شریف نے وضاحت پیش کی کہ یہ اُن کا نہیں بلکہ فنانس ڈیپارٹمنٹ کا فیصلہ تھا . چیف جسٹس ثاقب نثار نے وزیرِ اعلیٰ کی وضاحت مُسترد کر دی . شہباز شریف نے عدالت میں کہا کہ اُنھوں صاف پانی کمپنیوں کی بےضابطگی کی نشاندہی کی تھی اور70  ارب روپیہ بچایا . چیف جسٹس نے کہا کہ بحثیتِ وزیرِ اعلیٰ آپ اس کے  ذمہ دار ہیں دیگر ممالک میں تو استعفےٰ دے دئیے جاتے ہیں .سماعت کے دوارن شہباز شریف دُہراتے رہے کہ اُنھوں نے 70 ارب روپیہ بچایا ہے اُن کے اس کام کو سراہا جائے اگر کرپشن ثابت ہو جائے تو سزا بُھگتنے کیلئے تیار ہوں .56 کمپنیز اسکینڈل کیس سماعت کے دوران وزیرِ اعلیٰ نے نامناسب الفاظ کا استعمال کیا تھا کہ " مجھے پاگل کُتے نے کاٹا تھا کہ میں نے  قومی خزانے کو نُقصان سے بچای"ا . چیف جسٹس نے ان کے نامناسب الفاظ پر سخت برہمی کا اظہار کیا .جس کے بعد وزیراعلیٰ شہباز شریف نے مُعافی مانگ لی تھی .

متعلقہ خبریں