"جس نے گفتگو کرنی ہے وہ باہر جا کر کرے" جسٹس مُحمد بشیر کی نواز شریف کو وارننگ

"جس نے گفتگو کرنی ہے وہ باہر جا کر کرے" جسٹس مُحمد بشیر کی نواز شریف کو وارننگ 07 جون 2018 (13:28) 1:28 PM, June 07, 2018

احتساب عدالت میں شریف خاندان کے خلاف ایوان فیلڈ ریفرنڈم کی سماعت , نواز شریف نے اپنے لیگی رہنماؤؤں کیساتھ کمرہِ عدالت میں ہی گفتگو شروع کر دی جس پر جسٹس مُحمد بشیر نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ " جس نے گفتگو کرنی ہے وہ باہر برآمدے میں جا کر کرے ", . نواز شریف نے صحافیوں کے کسی بھی سوال کا کوئی جواب نہیں دیا. سابق وزیرِ اعظم نواز شریف اپنے وکلا کیساتھ مکالمے میں مصروف رہے .کاغاتی نامزدگی فارم سے مُتعلق فارم کے بارے میں فیصلے پر نواز شریف نے لیگی رہنما سے کہا کہ آج پارلیمنٹ کہاں کھڑی ہے ریاست کے باقی تین ستون کہاں ہیں . نواز شریف اور مریم نواز کی جانب سے11 سے 15 تاریخ تک استثنا کی درخواستیں بھی دائر کی گئں ہیں . نیب پراسکیوٹر مظفر عباس اپنے حتمی دلائل دئیے. نواز شریف کے وکیل کا مؤقف تھا کہ کلثوم نواز کہ عیادت کیلئے بیرونِ مُلک جانا ہے حاضری سے استثنا دیا جائے ۔

یاد رہیکہ اصغر خان کیس کی سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی ہے - عدالت نے اصغر خان کیس کے سلسلے میں نواز شریف کو حکم دیا کہ وہ جہاں بھی ہیں ایک گھنٹے کے اندر عدالت پہنچیں -چیف جسٹس کا کہنا ہے کہ :"مقدمے کے نوٹس بھی جاری ہوئے ہیں ,تمام ٹی وی چینلز پر ٹکرز بھی چلیں اور تمام اخبارات کی مین سٹوری بھی یہ ہی ہے اب نواز شریف کو عدالت میں پیش ہو جانا چاہیے جن جن کو اس مقدمے کے سلسلے میں نوٹس بھیجے گئے ہیں ان سب نے عدالت میں پیش ہونا ہے انہوں نے آئی ایس آئی سے رقم لینے کے الزام کو واضح کرنا ہے -"یہ نوٹس نواز شریف ,جاوید ہاشمی اور عابدہ حسین کو ملا ہے اس کے علاوہ الطاف حسن قریشی ,اجمل خان ,آفاق احمد,غلام مصطفیٰ اور امیر جماعت اسلامی سراج الحق ,سیکرٹری دفاع ,سیکرٹری خارجہ ,ڈی جی ایف آئی اے کو بلایا گیا تھا -ان میں سے صرف جاوید ہاشمی عدالت میں پیشہوئے -چیف جسٹس نے جاوید ہاشمی سے پوچھا کہ :"ہاشمی صاحب آپ نے رقم لی ہے یا نہیں لی -" جس کے جواب میں جاوید ہاشمی نے کہا کہ :" میں نے رقم نہیں لی پانچ سال تک اپنا کیس نیب میں بھگت کر وہاں سے کلیئر ہو کر آیا ہوں -اب میں صرف عدالت کے نوٹس پر لاہور سے اسلام آباد آیا ہوں -" جس پر چیف جسٹس نے ان کی تعریف کی کہ :"آپ سیاسی قیادت کے لیے مثال ہیں "

متعلقہ خبریں