کیپٹن ریٹائر صفدر احتساب عدلت کا فیصلہ آنے کے بعد فوری روپوش ہو گئے،ذرائع

کیپٹن ریٹائر صفدر احتساب عدلت کا فیصلہ آنے کے بعد فوری روپوش ہو گئے،ذرائع

کیپٹن ریٹائر صفدر احتساب عدلت کا فیصلہ آنے کے بعد فوری روپوش ہو گئے،ذرائع 07 جولائی 2018 (21:35) 9:35 PM, July 07, 2018

نیب کی ٹیم نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد اور مریم نواز کے شوہر کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی گرفتاری کیلئے مانسہرہ میں ان کے انتخابی دفتر پر چھاپہ مارا ہے۔ تاہم کیپٹن ریٹائرڈ صفدر گرفتاری دینے کی بجائے فرار ہو گئے ہیں۔

نیب کی ٹیم نے مانسہرہ کے علاقے اوگی میں واقع ن لیگ کے انتخابی دفتر پر جب چھاپا مارا تو وہاں تالا لگا ہوا تھا۔ ذرائع کے مطابق کیپٹن ریٹائر صفدر احتساب عدلت کا فیصلہ آنے کے بعد فوری روپوش ہو گئے تھے۔

دوسری جانب قومی احتساب بیورو( نیب ) نے سابق وزیراعظم نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ( ر ) صفدرکے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے ، نیب نے وارنٹ گرفتاری احتساب عدالت سے حاصل کئے۔ہفتہ کو نیب ذرائع کے مطابق نیب نے سابق وزیراعظم نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ( ر ) صفدرکے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے ، نیب نے وارنٹ گرفتاری احتساب عدالت سے حاصل کئے، ملزمان کی گرفتاری کیلئے ہر ممکن کوشش کی جائے گی، وارنٹ گرفتاری پر قانون کے مطابق عملدرآمد کیا جائے گا۔

یاد رہیکہ سابق وزیرِ اعظم نواز شریف نے ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے جب کہ قومی احتساب بیورو ( نیب ) نے نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ( ر ) صفدر کی گرفتاری کے لیے وارنٹ گرفتاری احتساب عدالت سے حاصل کرلیے ہیں اور وزارتِ داخلہ نے کیپٹن صفدر کا نام بلیک لسٹ میں شامل کردیا ہے۔اسلام آباد کی احتساب عدالت نے جمعے کو ایون فیلڈ ریفرنس کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے سابق وزیرِ اعظم نواز شریف کو 10 سال قید اور 80 لاکھ پاؤنڈ جرمانہ، ان کی صاحب زادی مریم نواز کو سات سال قید اور 20 لاکھ پاؤنڈ جرمانہ اور داماد کیپٹن ( ر ) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی تھی۔سابق وزیرِ اعظم نے ہفتے کو لندن سے اپنی قانونی ٹیم سے ٹیلی فونک کے کانفرنس کے ذریعے احتساب عدالت کے فیصلے پر مشاورت کی۔اطلاعات کے مطابق نوازشریف کی قانونی ٹیم نے انہیں جلد از جلد پاکستان آنے کا مشورہ دیا ہے اور احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا بھی کہا ہے۔نوازشریف نے اپنی لیگل ٹیم کو اسلام ہائی کورٹ میں اپیل دائر کرنے کے لیے گرین سگنل دے دیا ہے اور امید کی جارہی ہے کہ پیر کو اپیل اسلام آباد ہائی کورٹ میں دائر کردی جائے گی۔

متعلقہ خبریں