ستمبر 1965ء پاکستان کی تاریخ کا اہم ترین دن

ستمبر 1965ء پاکستان کی تاریخ کا اہم ترین دن

ستمبر 1965ء پاکستان کی تاریخ کا اہم ترین دن 06 ستمبر 2018 (15:01) 3:01 PM, September 06, 2018

ستمبر 1965ء پاکستان کی تاریخ کا اہم ترین دن ہے۔ 6 ستمبر 1965ء کو بھارتی فوج جنگ کا اعلان کیے بغیر انٹرنیشنل بارڈر کو کراس کرتے ہوئے پاکستان میں داخل ہوئی۔بھارتی فوج کا ارادہ تو یہ تھا کہ وہ 7 ستمبر کو صبح کا ناشتہ لاہور میں کرے گی لیکن پاکستان کی بہادر افواج نے ایسا ناشتہ پیش کیا کہ بھارتی فوج آج تک اس کا ذائقہ نہیں بھول پائی۔

بھارتی فوج کا منصوبہ یہ تھا کہ 6 ستمبر کی صبح لاہور کی سڑک پر بھارتی فوج سے اس وقت کے وزیراعظم لال بہادر شاستری اپنی کابینہ کے چند وزراء کے ہمراہ سلامی لیں گے اور شام کو لاہور جم خانہ میں کاک ٹیبل پارٹی کے دوران بیرونی دنیا کو خبر دی جائے گی کہ دنیائے اسلام کی سب سے بڑی ریاست کے دل پر کفار کا قبضہ ہو چکا ہے، لیکن بھارت کے ارادوں اور منصوبوں پر اس وقت پانی پھر گیا جب بھارتی وزیراعظم کو مختلف علاقوں میں بھارتی فوج کی شکست کی خبریں دی جانے لگیں۔

یہ وہ وقت تھا کہ جب نہ صرف پاک فوج کے سپوتوں نے بھارتی فوج کی تواضح کی بلکہ پوری قوم نے یکجا ہو کر بھارتی فوج کو ہر محاذ پر بدترین شکست کی صورت میں ناشتہ پیش کیا۔ پاک فوج نے وطن عزیز کے چپے چپے کا دفاع کیا اور پاکستانی عوام کی مدد سے ہر محاذ پر بھارتی فوج کو شکست دے کر تحفے میں انہیں ناکوں چنے چبوا دیے۔

سب سے اہم ناشتہ پاکستان کی فوج کے اہم سپوت میجر عزیز بھٹی نے بھارتی فوج کو پیش کیا۔ میجر عزیز بھٹی اس وقت لاہور سیکٹر کے علاقے برکی میں کمپنی کمانڈر تعینات تھے۔ میجر عزیز بھٹی مسلسل 5 دن تک بھارتی ٹینکوں کے سامنے سیسہ پلائی دیوار کی طرح ڈٹے رہے۔ 12 ستمبر 1965ء کو بھارتی فوج کے ایک ٹینک کا گولہ میجر عزیز بھٹی کی چھاتی میں لگا جس سے وہ شہید ہو گئے۔ میجرعزیز بھٹی شہید ہو کر امر ہو گئے اور بھارت کے دل میں اپنا خوف بٹھا گئے، پاکستانی قوم میجر عزیز بھٹی شہید کی قربانیوں کو آج تک نہیں بھولی اور نہ کبھی بھول پائے گی۔

6 ستمبر 1965ء کو بھارت کی طرف سے پاکستان پر مسلط کی گئی جنگ بھارت کے لیے ایک خوفناک انجام ثابت ہوئی، پاکستانی فوج نے نہ صرف اپنے علاقوں کا کامیابی سے دفاع کیا بلکہ بھارتی علاقوں کے اندر گھس کر بھارتی فوج کو بھی ناکوں چنے چبوائے۔

6 ستمبر 1965ء صرف پاک بھارت جنگ نہیں بلکہ کفر و اسلام کے درمیان عظیم معرکہ تھا جسے پوری قوم اپنے خلاف چیلنج جانتے ہوئے مقابلہ کرنے نکل کھڑی ہوئی۔ پاک فوج کے شانہ بشانہ پاکستان کی بہادر عوام نے جنگ کی دہشت و حشت کو ایک کھیل سمجھ کر جس بے جگری اور فیاضی کا مظاہرہ کیا وہ ہماری تاریخ کادرخشاں باب ہے۔

پاکستانی قوم ہر سال 6 ستمبر یوم دفاع کے طور پر منا کر نئے جذبے سے پاک وطن کے چپے چپے کے دفاع کا عہد کرتی ہے، دوسری جانب پاکستان کی یوم دفاع کی تقاریب کو دیکھ کر بھارتی فوج کھسیانی بلی کھمبا نوچے کے مصداق اس ناشتے کو یاد کرتی ہے جو پاک فوج اور پاکستانی قوم نے اسے پیش کیا تھا۔

متعلقہ خبریں