اسلام آباد ہائی کورٹ نے زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کا حکم دے دیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کا حکم دے دیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کا حکم دے دیا۔ 06 جولائی 2018 (14:28) 2:28 PM, July 06, 2018

اسلام آباد ہائی کورٹ نے زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے اپنے حکم میں کہا زلفی بخاری پر سفری پابندیاں ختم کی جائیں اور دوسری درخواست میں بلیک لسٹ سے نام نکلوانے کی تحقیقات کی استدعا بھی مسترد کر دی گئی۔

زلفی بخاری کی درخواست پر فیصلہ جسٹس عامر فاروق نے سنایا۔ نور خان ائیر بیس سویلین کے استعمال کرنے کی تحقیقات کی استدعا کو بھی مسترد کیا گیا ہے۔

یاد رہیکہ قبل ازیں پاکستان تحریکِ انصاف چئیرمین عمران خان کے قریبی دوست زُلفی بُخاری آج پہلی مرتبہ نیب کی کمبائن انویسٹیگیشن ٹیم کے سامنے پیش ہوئے اور نیب نے ان سے سے 15 اور کمپنیوں کے مُتعلق نیب کی جانب سے تحقیقات جاری ہیں . نیب حُکام نے زُلفی بُخاری سے ڈیڑھ گھنٹے تک تحقیقات کیں اور آج کی کاروائی مُکمل ہونے پر زُلفی بُخاری نیب آفس سے واپس روانہ ہو گئے ہیں .اُن سے کمبائن انویسٹیگیشن ٹیم کے سربراہ نے سوال کئے اُن کی دہری شہریت کے مُتعلق سوالات ُاٹھائے گئے. اُن سے پوچھا گیا کہ اُنھوں نے رقم بیرون مُلک مُتقل کی یا پھر اُن کے بیرونِ مُلک کیا اثاثے تھے اور ان کا آمدنی کا زریعہ کیا تھا زُلفی بُخاری نے ان کے تمام سولات کے جواب دئیے آج ایک بیرسٹ زُلفی بُخاری کے ساتھ آئے تھے مگر اُنھیں تفشیشی کمرے کے باہر ہی روک دیا گیا کہ آپ اندر نہیں جا سکتے ہیں. 435 آف شور کمپنیوں کے مُتعلق نیب نے تحقیقات شروع کر رکھی ہیں اُن میں سے 6 آف شور کمپنیاں زُلفی بُخاری کی ملکیت ہیں .ُزلفی بُخاری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ بُدھ کو اُنھیں دوبارہ طلب کیا گیاتھا. .

متعلقہ خبریں