مجھے کسی کتے نے نہیں کاٹا میں ملک کے اربوں بچاؤں - شہباز شریف کا چیف جسٹس کو جواب -چیف جسٹس کا ایسا جواب کہ شہباز شریف کو معذرت کرنی پڑی

مجھے کسی کتے نے نہیں کاٹا میں ملک کے اربوں بچاؤں - شہباز شریف کا چیف جسٹس کو جواب -چیف جسٹس کا ایسا جواب کہ شہباز شریف کو معذرت کرنی پڑی

مجھے کسی کتے نے نہیں کاٹا میں ملک کے اربوں بچاؤں - شہباز شریف کا چیف جسٹس کو ... 05 جون 2018 (03:40) 3:40 AM, June 05, 2018

لاہور:جب چیف جسٹس کے حکم پر شہباز شریف لاہور عدالت میں پیش ہوئے اور اپنی کاکردگی کے متعلق انہیں بتایا تو تو چیف جسٹس نے کہا کہ :"آپ نے جو ایک کمپنی میں سات ارب روپے دیے ہیں ان سے کو ئی کام نہیں ہوا آپ ان کے بارے میں بتائیں -" شہباز شریف نے کہا کہ :ہم نے سات ارب روپے کی کرپشن پکڑی ہے آپ ہمارے اچھے کاموں کو سراہیں "

چیف جسٹس نے کہا کہ :"کمپنی کے اندر لاکھوں روپے کی کرپشن ہوئی ہے اور بہت سے نااہل افراد کو بھرتی کیا گیا ہے -" جس کے جواب میں شہباز شریف نے کہا ہی :" میں نے یہ بھرتیاں نہیں کروائیں میرے حکم پر یہ نہیں ہوئیں -نہ ہی میں نے اس کا نوٹس لیا ہے -"

جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ :"یہ بھرتیاں آپ کے حکم پر ہوئیں ہیں آپ پنجاب کے وزیر اعلیٰ ہیں آپ ہی اس کے زمہ دار ہیں کون زمہ دار ہے اس کا -" شہباز شریف نے کہا کہ :"وزات خزانہ یا بورڈ آف ڈائریکٹرز اس کے زمہ دار ہیں "

چیف جسٹس نے کہا کہ :" یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ آپ کے علم میں لائے بغیر یہ تعیناتیاں کی گئی ہوں - آپ ہی اس کے زمہ دار ہیں "جس پر شہباز شریف نے کہا کہ :" مجھے کسی کتے نے نہیں کاٹا میں ملک کے اربوں بچاؤں "

چیف جسٹس نے جواب دیا کہ :"ہمیں نہیں پتا آپ کو کس نے کاٹا ہے " جس پر شہباز شریف نے معذرت کی - چیف جسٹس نے کہا کہ :"آپ کو ایسے الفاظ زیب نہیں دیتے ہیں -آپ اپنے جوابات سے عدالت کو مطمئن نہیں کر سکے ہیں اور آپ کمپنی کے سی ای او کو جس کی تنخواہ صرف ایک لاکھ ہے ا کو سولہ لاکھ کیوں دیتے رہے ہیں -اور قوم کو آپ نے کروڑوں کو مقروض بنا دیا ہے -ہم آپ سے یہ سارے پیسے واپس لیں گے چاہے وہ آپ دیں یا ان سے لے کے دیں جن کو دیے ہیں "

متعلقہ خبریں