امجد اسلا م امجد:اس کو رخصت تو کیا تھا مجھے معلوم نہ تھا ...............سارا گھر لے گیا گھر چھوڑ کے جانے والا

امجد اسلا م امجد:اس کو رخصت تو کیا تھا مجھے معلوم نہ تھا ...............سارا گھر لے گیا گھر چھوڑ کے جانے والا

امجد اسلا م امجد:اس کو رخصت تو کیا تھا مجھے معلوم نہ تھا ...............سارا گھر لے ... 05 جولائی 2018 (16:07) 4:07 PM, July 05, 2018

اب خوشی ہے نہ کوئی درد رلانے والا

ہم نے اپنا لیا ہر رنگ زمانے والا

ایک بے چہرہ سی امید ہے چہرہ چہرہ

جس طرف دیکھیے آنے کو ہے آنے والا

اس کو رخصت تو کیا تھا مجھے معلوم نہ تھا

سارا گھر لے گیا گھر چھوڑ کے جانے والا

دور کے چاند کو ڈھونڈو نہ کسی آنچل میں

یہ اجالا نہیں آنگن میں سمانے والا

اک مسافر کے سفر جیسی ہے سب کی دنیا

کوئی جلدی میں کوئی دیر سے جانے والا

متعلقہ خبریں