غزہ میں اسرائیلی فوج کا فلسطینی خواتین پر حملہ

غزہ میں اسرائیلی فوج کا فلسطینی خواتین پر حملہ

غزہ میں اسرائیلی فوج کا فلسطینی خواتین پر حملہ 05 جولائی 2018 (12:16) 12:16 PM, July 05, 2018

فلسطین کے علاقے غزہ کی مشرقی سرحد پر کل منگل کے روز ہزاروں خواتین نے اسرائیل کے خلاف ریلی میں شرکت کی۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج نے فلسطینی خواتین کے احتجاج کو منتشر کرنے کے لیے ان پر زہریلی آنسوگیس کی شیلنگ کی جس کے نتیجے میں دسیوں خواتین زخمی ہوگئیں۔

ضرور پڑھیں: مکہ مکرمہ میں خاتون کی گاڑی کو آگ لگادی گئی۔

ضرور پڑھیں:بیٹا ماں کو اولڈ ہاؤس بھجوانا چاہتا تھا ماں نے بیٹے کو دنیا سے بھجوا دیا،دونوں کی عمریں جانکر ہر کوئی حیران رہ گیا۔

ضرور پڑھیں:اگر ایران نے خطے کے ممالک کے تیل کی برآمدات بند کیں تو ھم اسکی۔۔۔۔۔۔۔۔امریکہ نے ایران کی اہم ترین چیز بند کرنے کی دھمکی دے دی۔

ضرور پڑھیں:سعودی عرب کے ج نرل آڈٹ بیورو نے غیر قانونی طریقے سے حاصل 8 ارب 30 کروڑ ریال کی کردہ رقوم واپس قومی خزانے میں جمع کرا دیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق غزہ اور اسرائیل کی سرحد پر حفاظتی باڑ سے 300 میٹر کے فاصلے پر ہزاروں فلسطینی خواتین نے جمع ہو کر احتجاج کیا اور اسرائیل کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔’فلسطینی خواتین محاصرہ توڑنے اور واپسی کی راہ پر‘ کے عنوان سے اس ریلی میں ہزاروں کی تعداد میں خواتین اور بچوں نے شرکت کی۔فلسطینی وزارت صحت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ قابض فوج نے پرامن خواتین ریلی کومنتشر کرنے کے لیے ان پر بندوقوں سے فائرنگ اور آنسوگیس کی زہریلی گیس کی شیلنگ کی جس کے نتیجے میں دسیوں خواتین زخمی ہوگئیں جب کہ بڑی تعداد میں دم گھںٹے سے متاثر ہوئیں۔وزارتِ صحت کے مطابق اسرائیلی فوج کی فائرنگ اور چَھروں سے 17 خواتین زخمی ہوئیں۔ مظاہرے میں شریک 43 سالہ ریم ابو عرمانہ نے کہا کہ اسرائیلی فوج نے 14 مئی کو میرے 15 سالہ بیٹے کو گولیاں مار کر شہید کردیا تھا۔ میرا بیٹا بھی ایک پرامن مظاہرے میں شریک تھا۔ آج میں اس کا مشن آگے بڑھانے کے لیے آئی ہوں۔ ہم اپنی سرزمین اور اپنے حقوق کا دفاع کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں