امریکا میں دو مقامی بچوں ڈوبنے سے بچانے کی کوشش میں دو مسلم نوجوان ڈوب گئے،قربانی کی عظیم مثال

امریکا میں دو مقامی بچوں ڈوبنے سے بچانے کی کوشش میں دو مسلم نوجوان ڈوب گئے،قربانی کی عظیم مثال

امریکا میں دو مقامی بچوں ڈوبنے سے بچانے کی کوشش میں دو مسلم نوجوان ڈوب ... 04 جولائی 2018 (23:09) 11:09 PM, July 04, 2018

امریکا کی ریاست میساچوسٹس میں دو مقامی بچوں کو ڈوبنے سے بچانے کی کوشش کرنے والے سعودی طلبہ دریائے Chicopee میں غرق ہو کر اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ یہ افسوس ناک واقعہ جمعے کے روز پیش آیا۔ جاں بحق ہونے والے دونوں طلبہ کے نام جاسر اور ذیب ہیں۔

جاسر کے بھائی اور ذیب کے چچا کے بیٹے نے عرب میڈیا کو بتایا کہ دونوں نوجوان گزشتہ پانچ برس سے اسکالر شپ پر سول انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کر رہے تھے اور آئندہ دو ہفتوں کے دوران وہ فارغ التحصیل ہونے والے تھے۔ دونوں طلبہ فارغ التحصیل ہونے اور وطن واپس لوٹنے کے انتظار کے سبب گزشتہ تین برس سے اپنے گھر والوں سے نہیں مل سکے تھے البتہ جاسر اور ذیب کا اپنے گھر والوں سے آخری رابطہ ان کی وفات سے دور روز قبل ہوا تھا۔

ضرور پڑھیں:نوجوان نے ویڈیو کے دوران اپنے سر پر گولی مار لی ۔

ضرور پڑھیں:ایک ڈرائیور ڈرائیونگ کے دوران ویڈیو بنا رہا تھا کہ اچانک شدید حادثہ ہو گیا،لیکن اسکے بعد جو کچھ ہوا دنیا اس پر حیران ہو گئی۔

ضرور پڑھیں:دُبئی کے حکمران شیخ محمد بن راشد المکتوم کی جانب سے سرکاری ملازمین کے حق میں شاندار اقدام

عوض کے مطابق دونوں متوفی نوجوانوں نے جاسر کے ایک بھائی کو بھی اپنے ساتھ چلنے کو کہا تھا تاہم وہ دوسری ریاست میں اپنے دوستوں کے ساتھ گریجویشن کی خوشیاں منانے کے سبب نہیں جا سکا۔عوض نے مزید بتایا کہ "میتوں کی حوالگی کے حوالے سے ابھی تک امریکی حکام کی جانب سے اقدامات مکمل نہیں ہوئے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ سعودی سفارت خانے کی جانب سے انتظامات مکمل کر کے دونوں افراد کی میتیں سعودی عرب کے جنوبی صوبے نجران پہنچائی جائیں"۔امریکی ریاست میساچوسٹس نے دونوں سعودی نوجوانوں کی شناخت ذیب الیامی (27 سالہ) اور جاسر آل راکہ (25 سالہ) کے طور پر کی۔ حکام نے واضح کیا کہ ایک نوجوان کی لاش جمعے کی رات مل گئی تھی جب کہ دوسرے نوجوان کی لاش پیر کی صبح ساڑھے سات بجے ملی۔

متعلقہ خبریں