پاکستان بدترین پلاننگ کے دور سے گُزر رہا ہے . انگریزوں کے دور سے بھی پہلے کی بات ہے کہ اکبر بادشاہ نےایک وارڈ فیڈ بنایا تھا وارڈ فیڈ کے اُوپر ایک تالاب بنایا گیا تھا جہاں سے پانی نیچے سپلائی ہوتا تھا .۔۔۔۔۔۔۔۔پڑھئے اہم حقائق

پاکستان بدترین پلاننگ کے دور سے گُزر رہا ہے . انگریزوں کے دور سے بھی پہلے کی بات ہے کہ اکبر بادشاہ نےایک وارڈ فیڈ بنایا تھا وارڈ فیڈ کے اُوپر ایک تالاب بنایا گیا تھا جہاں سے پانی نیچے سپلائی ہوتا تھا .۔۔۔۔۔۔۔۔پڑھئے اہم حقائق

پاکستان بدترین پلاننگ کے دور سے گُزر رہا ہے . انگریزوں کے دور سے بھی پہلے کی ... 04 جولائی 2018 (22:23) 10:23 PM, July 04, 2018

اوریا مقبول جان نے پروگرام حرف زار میں کہا ہیکہ پاکستان بدترین پلاننگ کے دور سے گُزر رہا ہے . انگریزوں کے دور سے بھی پہلے کی بات ہے کہ اکبر بادشاہ نےایک وارڈ فیڈ بنایا تھا وارڈ فیڈ کے اُوپر ایک تالاب بنایا گیا تھا جہاں سے پانی نیچے سپلائی ہوتا تھا . میں جب وہاں گیا تھا تو ایسی جگہوں سے سڑکیں اور گلیاں نکالیں گئی تھیں کہ پانی کا ایک قطرہ آج بھی نہیں رُکتا ہے . ہر گلی کیساتھ چھوٹی چھوٹی نالیاں بنائیں گئی تھیں . 1980 میں جب کوئٹہ گیا تو وہاں بارش ہو رہی تھی تو جب وہاں بارش رُکی تو وہاں نکاسی کا اتنا بہترین نظام تھا کہ جوتے تک گیلے نہیں ہوتے تھے .

ضرور پڑھیں:کالا باغ زندگی اور موت کا مسئلہ ہے،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اے این پی کے سربراہ اسفند یار ولی کا سپریم کورٹ کے فیصلے پر سخت ترین ردعمل

ضرور پڑھیں:انتخابات 2018 کے لیے امیدواروں نے اپنے خفیہ خزانوں کا منہ کھول دیا،جنہوں نے اثاثے لاکھوں میں بتائے،کڑوڑوں اڑانے لگے

جب ضرور پڑھیں:میاں شہباز شرہف نے لاہور کے اندر تباہی پھیلانے کے علاوہ اور کوئی کام نہیں کیا،سارے کا سارا لاہور ڈوب کر رہے گیا ہے . کسی جگہ پر گڑھے پڑ گئے تھے اور کسی جگہ پر کشتیاں چل رہی تھیںبڑی آواز بلندہم راوی میں داخل ہوتے تھے تو وہاں ایک باغ تھا پھر راوی دریا سے لے کر پاکستان کے دوسرے دریا تک آبادی نہیں ہوتی تھی . لاہور شہر کے پانی کا سارا بہاؤ شمال کی جانب ہوتا تھا . اب راوی کے سامنے بند روڈ تو بنا دیا گیا ہے مگر اس کا کوئی فائدہ نہیں ہے . اگر بہاولپور ,گوجرنوالہ , رحیم یار خان اور دیگر علاقوں کی بات کی جائے اگر وہاں سیلاب آ گیا تو صورتحال 2007 جیسی ہو جائیگی . جب نوشہرہ شہر میں موجود لوگوں کی چھتوں تک پانی پہنچ گیا تھا . اگر مُلک میں سیلاب آ جاتا ہے تو حکومت نے کوئی بھی ریسکیو ٹیم نہیں بنائی ہوئی ہے .ن لیگ نے کوئی دفاعی اور اصلاحی کام نہیں کروائیں ہیں اور سارے پنجاب کی انویسٹمنٹ ن لیگی حکومت نے لاہور پر لگا دی 40 ملین ڈالر قرض لےلیا اقر ملک کو مقروض کر دیا ہے . مگر لاہور میں بھی کوئی ترقیاتی کا نہیں ہوا ہے . جہاں نالہ بنانا چاہئیے تھا اس جگہ پر بھی سڑک بنا دی گئی ہے . جو چھاؤنیاں انگریز بنا کر گئے تھے وہاں پر تو جگہیں نہیں ڈوبتی ہیں مگر جو جگہیں مُسلمان حکومت نے بنائی ہیں وہاں ساری جگہیں ڈوبی ہوئی ہیں . پاکستان کے کسی بھی شہر میں اسٹرونگ مینجمنٹ کی پلاننگ موجود ہی نہیں ہے .

متعلقہ خبریں