اصحاب الرس کا ذکر قرآن مجید میں دو جگہوں پر آیا ہے -عربی زبان مین

اصحاب الرس کا ذکر قرآن مجید میں دو جگہوں پر آیا ہے -عربی زبان مین "الرس "۔۔۔۔۔۔۔۔پڑھئے اصحاب الرس کے بارے میں اہم معلومات

اصحاب الرس کا ذکر قرآن مجید میں دو جگہوں پر آیا ہے -عربی زبان مین "الرس ... 04 جولائی 2018 (18:53) 6:53 PM, July 04, 2018

اصحاب الرس کا ذکر قرآن مجید میں دو جگہوں پر آیا ہے - عربی زبان مین " الرس " اس کنویں کو کہا جا تا ہے جس کی منڈٰیر پتھروں سے بنائی گئی ہو -بعض لوگوں کے مطابق یہ ایک خاص کنواں تھا جس کے کنارے قوم ثمود آباد تھے اور وہی پھر اصحاب الرس کے نام سے مشہور ہوئے -حضرت ابو بکر محمد بن حسن نقاش رحمۃاللّٰہ علیہ کہتے ہیں کہ اسی کنویں سے اصحاب الرس کی پانی پینے کی اور آب پاشی کی ضروریات پوری ہوتی تھیں -ان کا بادشاہ بہت نیک سیرت تھا جب وہ فوت ہو گیا تو لوگوں کو بہت افسوس ہوا ابھی بادشاہ کی وفات کو چند دن ہی گزرے تھے کہ شیطان اس بادشاہ کی شکل میں لوگوں کے پاس آیا اور کہا کہ :" میں مرا نہیں تھا میں تو کچھ دنوں کے لیے غائب ہو گیا تھا تا کہ دیکھوں کہ تم لوگ کیا کرتے ہو -"سارے لوگ بہت خوش ہوئے -اس نے کہا :"میرے لیے پردہ لگا دو میں کبھی نہیں مروں گا( لیکن تم لوگوں کی نظروں سے اوجھل رہوں گا )-"بہت سے لوگوں نے شیطان کی بات کو سچ سمجھ لیا اور اس کی پوجا کرنے لگے -

یہ بھی پڑھیں:وہ وقت جب ترکی کی پارلینمنٹ میں اذان دینے کی پاداش میں سات مسلمان شہید کر دئیے گئے۔ پہلے نے کہا اللّٰہ اکبر اسے گولی مار دی اسکےبعد دوسرے آیا۔۔پڑھئے رلا دینے والا واقعہ

یہ بھی پڑھیں:ترکی کی خلافت عثمانیہ توڑنے کیلئے لارنس آف اریبیہ کس کا منصوبہ تھا،سعودی عرب میں اور حجاز میں ایک آدمی تھا شیز مکہ کا سید تھا۔۔۔۔۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے عاشقوں نے کہا حجاز آپ کا۔۔۔۔پڑھئے اہم حقائق

یہ بھی پڑھیں:صدقہ کی فضیلت‎ پر پڑھئے ایک خوبصورت اقعہ

یہ بھی پڑھیں:خانہ کعبہ کے سامنے موجود کلاک ٹاو ر میں موجود کمرے کو دنیا کی بلند ترین مسجد کیوں کہا جاتا ہے؟پڑھئے اہم حقائق

اللّٰہ تعالیٰ نے ان لوگوں کے لیے ایک نبی مبعوث فرمایا اور اس نبی نے ان لوگوں سے کہا کہ :"پردے کے پیچھے سے بات کرنے والا بادشاہ نہیں بلکہ شیطان ہے -"اس نبی نے انہیں شیطان کی عبادت سے روکا اور اللّٰہ کی عبادت کا حکم دیا -حضرت سبیلی رحمۃ اللّٰہ کا کہنا ہے کہ ان نبی پر نیند کی حالت میں وحی نازل ہوتی تھی - ان نبی کا نام حنظلہ بن صفوان علیہ السلام تھا اور ان لوگوں نے آپ کو شہید کر کے کنویں میں پھینک دیا جس کے نتیجے میں کنویں کا پانی خشک ہو گیا -ان کے درخت اور پھل سوکھ گئے پینے کے لیے پانی نہ رہا نتیجتاً ان کے گھر ویران ہو گئے اور وہ ادھر ادھر بکھر گئے اور سب کے سب ہلاک ہو گئے -

یہ بھی پڑھیں:شرابیوں کی محفل میں حضرت جنید بغدادی کی دو دکعت نماز نے کیسے سب کی زندگی بدل ڈالی۔پڑھئے ایمان افروز واقعہ

یہ بھی پڑھیں:حضور نبی کریم (ص) اورحضرت بلال رضی اللہ عنہ کی پہلی ملاقات

یہ بھی پڑھیں:سنت رسول ﷺ قیلولہ کے فوائد پڑھئے اور فائدہ حاصل کیجئے۔

یہ بھی پڑھیں:وہ کڑوڑ پتی کینسر کا مریض مسلمان نوجوان جس نے اپنا سب کچھ اللہ کی راہ میں خرچ کر دیا۔پڑھئے امت مسلمہ کے فخر علی کی کہانی

یہ بھی پڑھیں:سرور کائنات صلی اللہ علیہ وسلم کی اپنی امت سے محبت کس قدر گہری تھی-ایک سبق آموز واقعہ پڑھئے

یہ بھی پڑھیں:اللہ تعالٰی کی رحمت کا ایمان افروز واقعہ-وہ آدمی جو چالیس سال سے اللہ کی نافرمانی کر رھا تھا -لیکن اسکی معافی مانگن پر اللہ نے اسکے ساتھ کیا معاملہ فرمایا-پڑھئے

یہ بھی پڑھیں:حضرت موسیٰ علیہ السلام نے انہیں ڈھارس دی اور کہا :"میری قوم والو!اللّٰہ سے مدد مانگو اور اپنے دل مضبوط رکھو یہ زمین آدمیوں کی نہیں ہے ,اللّٰہ کی ہے اور اللّٰہ ہی جسے چاہتا ہے زمین کا مالک بنا دیتا ہے -یہ کیا عیب ہے کہ تمہارا رب تمہارے دشمن کو مٹا ڈالےاور تمہیں زمین کی حکومت دے کر دیکھے ,

متعلقہ خبریں